افغان طالبان نے مذاکرات جاری رکھنے کیلئےامریکہ کے سامنے شرائط رکھ دیں

افغان طالبان نے مذاکرات جاری رکھنے کیلئےامریکہ کے سامنے شرائط رکھ دیں


کابل (24 نیوز) افغان طالبان رہنماؤں نے افغانستان میں قیامِ امن کے لیے امریکا کے ساتھ مذاکرات جاری رکھنے کے لیے امریکی فوجی اڈے بند کرنے اور سیکڑوں قیدیوں کی رہائی کا مطالبہ کردیا۔

امریکی میڈیا کے مطابق امریکا کی جانب سے سابق سفیر زلمے خلیل زاد کو افغانستان میں امن مذاکرات کے لیے خصوصی مشیر تعینات کیا گیا ہے، جو رواں ہفتے امریکا اور طالبان کے درمیان مذاکرات کے دوسرے دور کے لیے متحدہ عرب امارات پہنچے تھے، سینئر طالبان رہنماء نے امریکی میڈیا کو انٹریو دیتے ہوئے کہا ہے کہ امریکی حکام کے ساتھ ہونے والی اس ملاقات میں یا تو مزید نتیجہ خیز گفتگو کی راہیں ہموار ہوں گی یا یہ سلسلہ ہمیشہ کے لیے ختم ہو جائے گا۔

امریکی میڈیا کے مطابق افغان طالبان رہنماؤں نے افغانستان میں قیامِ امن کے لیے امریکا کے ساتھ مذاکرات جاری رکھنے کے لیے امریکی فوجی اڈے بند کرنے اور سیکڑوں قیدیوں کی رہائی کا مطالبہ کردیا ہے۔

دوسری جانب افغان پولیس اور فوجی بیسز پر طالبان کے حملوں میں سیکیورٹی فورسز کے 10 اہلکار ہلاک ہوگئے ہیں۔ فائرنگ کے تبادلے میں طالبان کے 22 جنگجو ہلاک جبکہ 16 زخمی ہوئے۔

  

 

وقار نیازی

سٹاف ممبر، یونیورسٹی آف لاہور سے جرنلزم میں گریجوایٹ، صحافی اور لکھاری ہیں۔۔۔۔