آئندہ مالی سال کیلئے دفاعی بجٹ کا حجم 12سو ارب کرنے کی تجویز


اسلام آباد (24 نیوز) آئندہ مالی سال کے لیے دفاعی بجٹ کا حجم 12 سو ارب روپے کرنے کی تجویز دی گئی ہے۔ افواج کے ترقیاتی منصوبوں کے لیے 100 ارب روپے جبکہ مسلح افواج کے تینوں ونگز کے لیے 11 سو ارب روپے کی تجویز دی گئی ہے۔

ذرائع کے مطابق دفاعی بجٹ 2018-19 کے لیے وزارت خزانہ حتمی جائزہ لے رہی ہے۔ اگلے مالی سال کے دفاعی بجٹ کا حجم 12 سو ارب روپے کی تجویز کے حوالے سے معلومات سامنے آئی ہیں۔ 100 ارب روپے مسلح افواج کے ترقیاتی منصوبوں کے لیے مختص کیے گئے ہیں۔

یہ بھی پڑھئے: سپریم، پشاور ہائیکورٹ کی فاٹا تک توسیع، صدرمملکت نے بل کی منظور دیدی 

24نیوز ذرائع کا کہنا ہے کہ مسلح افواج کے تینوں بازووں کے لیے 11 ارب روپے کی تجویز دی گئی ہے۔ دفاعی بجٹ کے علاوہ فاٹا کے ترقیاتی منصوبوں کے لیے 90 ارب روپے مختص کیے گئے۔

پنشن کی مد میں 342.5 ارب روپے اس کے علاوہ ہیں۔ یہ رقم دفاعی بجٹ کے بجائے وفاقی بجٹ کا حصہ ہو گی۔ پنشن کی مد میں 270 ارب روپے فوجی پنشنرز کے لیے مختص کیے گئے ہیں۔ 72.5 ارب روپے فوجی اداروں میں سویلینز کی پنشن کے لیے مختص کیے گئے ہیں۔

پڑھنا نہ بھولئے: عدالت کی امریکی اتاشی کا نام ای سی ایل میں شامل کرنے کی ڈیڈ لائن 

واضح رہے کہ 2017-18 کا دفاعی بجٹ 920 ارب روپے ہے۔ جس میں 78 ارب روپے کا اضافہ ہوا۔ جبکہ نظرثانی شدہ دفاعی بجٹ 998 ارب روپے ہے۔