شہر قائد میں تاحال بجلی بحال نہ ہوسکی،پانی نایاب،شہری بوند بوند کو ترس گئے


کراچی ( 24نیوز )شہر قائد بجلی کے بریک ڈاﺅن سے اندھیرے میں ڈوب گیا، کے الیکٹرک کی سر توڑ کوششوں کے باوجود بحال نہ ہوسکی،ترجمان کے الیکٹرک کا کہنا ہے کہ چند گھنٹوں کے اندرتمام علاقوں میں بجلی بحال کردی جائے گ۔
شہرقائد ایک مرتبہ پھررات بھراندھیرے میں ڈوبا رہا ،جامشورو کے قریب ایکسٹرا ہائی ٹینشن ایکسٹینشن لائن ٹرپ کرنے کے باعث شہر قائد کا 90 فیصد حصے میں بجلی غائب رہی ،رات بھر بجلی غائب رہنے کے بعد علی الصبح شہر کے مختلف علاقوں میں بجلی بحال ہونے کا سلسلہ شروع ہوا،لیکن تاحال شہر کے مختلف علاقوں میں بجلی بحال نہیں ہوسکی ۔


کراچی میں ایک ہفتے کے دوران بجلی دوسرے بڑے بریک ڈاو¿ن ہے اس سے قبل 11 اگست کو بھی شہر میں بجلی کا بریک ڈاو¿ں ہوا تھا۔
ترجمان کے الیکٹر کے مطابق ایکسٹرا ہائی ٹینشن لائن ٹرپ کرنے کاباعث نیشنل گرڈ کو 500 میگاواٹ بجلی کی سپلائی معطل ہوگئی، جس کے باعث کراچی کے علاوہ صوبہ کے بیشتر شہروں کو بجلی کی سپلائی معطل ہوگئی۔
ادھر بجلی کے بریک ڈاون کے باعث دھابیجی، گھارو اور پپری پمپنگ اسٹیشن بھی متاثر ہوئے، جس کی وجہ سے شہر کو پانی کی فراہمی معطل ہوگئی،شہری بوند بوند کو ترس گئے ہیں۔


ترجمان کے الیکٹرک کے مطابق کورنگی، لانڈھی، شاہ فیصل، گذری، بلوچ کالونی، ڈیفنس، گلستان جوہر، گلشن اقبال کے مختلف بلاکس، فیڈرل بی ایریا بلاک ون، عائشہ منزل، یاسین آباد، گلشن شمیم، لیاقت علی خان چوک، عائشہ منزل، گلبرگ کے تمام بلاکس، عزیز آباد، لیاری اور اولڈ سٹی ایریا میں بجلی کی فراہمی بحال ہوگئی ہے۔ تاہم قائد آباد، لانڈھی انڈسٹریل ایریا، ملیر ہالٹ، رفاہ عام اور الفلاح سمیت شہر کے بیشتر حصوں میں اب تک بجلی بحال نہیں ہوسکی۔