سرگودھا :اراضی ہتھیانے کے لیے جاگیردار وں نے محنت کش پر زمین تنگ کر دی

سرگودھا :اراضی ہتھیانے کے لیے جاگیردار وں نے محنت کش پر زمین تنگ کر دی


 سرگودھا (24نیوز) زمین ہتھیانے کے لیے جاگیردار وں نے محنت کش پر زمین تنگ کر دی ‘جناح کالونی میں بااثر افراد کا غریب کسان پر بیہمانہ تشدد، میانی سے واپس آتے ہوئے سڑک پر مصلح افراد کے ہمراہ بدترین تشدد کا نشانہ بناتے ہوئے قیمتی موبائل اور پچاس ہزار روپے بھی چھین لیے، زمین ہتھیانے کے لیے جاگیردار وں نے محنت کش پر زمین تنگ کر دی، اہلخانہ پر بھی متعدد بار تشدد، میڈیکل رپورٹ میں تشدد ثابت ہوجانے کے باوجود مقدمہ درج نہ کیا جا سکا۔
تفصیلات کے مطابق متاثرہ کسان اشرف جاگیرداروں کا بھائی پنجاب پولیس کا اعلیٰ افسر ہے جس وجہ سے پولیس شنوائی نہیں کر رہی ،و زیرا علیٰ پنجاب انصاف دیں،تھانہ میانی کے علاقہ جناح کالونی کے کسان اشرف نے اہل علاقہ کے ہمراہ احتجاج کرتے ہوئے بتایا کہ میں میانی بنک سے اپنی بیٹی کی شادی کے لیے پیسے لے کر اور اپنی فصل دے کر ٹریکٹر پر واپس آ رہا تھا کہ پکھو وال ضلع سرگودھا کے رہائشی چوہدری رفاقت، لیاقت اور سرفراز نے مصلح افراد کے ہمراہ راستے میں مجھے اسلحہ کے زور پر روک کر بدترین تشدد کا نشانہ بنایا اور زمین ہتھیانے کے لیے اہلخانہ سمیت جان سے مار دینے کی دھمکیاں دیتے رہے متاثرہ کسان اشرف نے کہا چوہدری رفاقت، لیاقت اور سرفراز کا ایک بھائی پنجاب پولیس میں ڈی ایس پی ہے جس کا نام سکندر گوندل ہے اس کی ایماء پر ہم ظلم و بربریت کے پہاڑ ڈھائے جا رہے ہیں اور مقامی پولیس انصاف دینے کی بجائے اپنے پیٹی بند بھائی کی طرف داری کرتی ہے اور ہمارا مقدمہ درج نہیں کرتی ۔
متاثرہ کسان کے بھائی نے بھی 24نیوز سے بات کرتے ہوئے کہا کہ پنجاب پولیس میں تعینات ڈی ایس پی سکندر اپنے بھائیوں کے زریعے ہم پر تشدد کروا رہا اور ہماری قیمتی زمین ہتھیانا چاہتے ہیں اپنے ڈیروں پر اشتہاری رکھے ہوئے ہیں۔
اشرف کے اہلخانہ نے 24نیوز سے بات کرتے ہوئے کہ با اثر جاگیردار وں نے ہمارے گھر میں گھس کر ہمارے بچوں کو بھی تشدد کا نشانہ بنایا اور چادر اور چار دیواری کا تقدس پامال کرتے ہوئے خواتین سے بھی بدتمیزی کی ہمارا مطالبہ ہے وزیر اعلیٰ پنجاب ہمیں انصاف دیں۔
متاثرہ کسان کی والدہ نے 24نیوز سے بات کرتے ہوئے کہا کہ وزیرا علیٰ پنجاب میاں شہباز شریفے سے اپیل ہے کہ ہمارے ساتھ انصاف کریں اور ملزمان کو قرار واقعی سزا دلوائیں،اس بارے میں تھانہ میانی کے پولیس ترجمان محرر ولائیت سے پوچھا گیا تو اس نے کہا کہ درخواست موصول ہو گئی رپورٹ درج کر لی گئی ہے ہم پر کوئی پریشر نہیں ہے کاروائی کی جائے گی۔