مختلف شہروں سے معصوم لڑکوں، لڑکیوں سے زیادتی کے واقعات سامنے آنے لگے


اسلام آباد (24 نیوز) قصور میں کمسن زینب سے زیادتی اور قتل کا معاملہ ابھی زیادہ پرانا نہیں ہوا تھا کہ ملک کے مختلف علاقوں سے معصوم لڑکوں اور لڑکیوں سے زیادتی کے ایک کے بعد ایک واقعات سامنے آنے لگے۔

قصور میں کمسن زینب کا زخم ابھی تازہ ہے کہ ہوس کے پجاریوں کی درندگی کی نئی داستانیں سامنے آنے لگیں۔ اوکاڑہ میں بھی 9 سال کی بچی سے مبینہ زیادتی کا ایک اور دلخراش واقعہ سامنے آگیا۔ ملزم بچی کو قرآن مجید پڑھاتا تھا، بچی کو ہسپتال منتقل کردیا گیا۔ پولیس نے ملزم کو گرفتار کرکے مقدمہ درج کرلیا۔

نارووال میں دکاندار نے 11 سالہ بچی کو اپنی ہوس کا نشانہ بنا ڈالا، پولیس نے مقدمہ تو درج کرلیا، لیکن درندہ صفت ملزم کا کوئی سراغ نہ مل سکا۔

جہلم کے علاقہ دینہ میں ایک اور بچی درندگی کا شکار ہوگئی، پولیس نے 8 سال کی بچی سے زیادتی کے ملزم اسحاق کو گرفتار کرلیا۔

منڈی بہاوالدین کے علاقے قادر آباد میں تین افراد نے خاتون کو مبینہ اجتماعی زیادتی کا نشانہ بنایا۔ پولیس نے دو خواتین سمیت پانچ ملزموں کو گرفتار کرلیا۔

خیرپور میں بھی حوا کی ایک اور بیٹی جنسی تشدد کا شکار ہوئی۔ پولیس نے واقعے کا مقدمہ تو درج کرلیا، زیادتی کا شکار ہونے والی لڑکی شمائلہ کا والد ذہنی توازن کھو بیٹھا۔

سیالکوٹ میں پولیس نے بچوں سے زیادتی کے ملزم ہی رہا کر دیئے، جس پر اہل علاقہ سراپا احتجاج ہوگئے۔