قومی اسمبلی میں ہنگامہ آرائی, اندرونی کہانی سامنے آگئی

قومی اسمبلی میں ہنگامہ آرائی, اندرونی کہانی سامنے آگئی


اسلام آباد( 24نیوز ) قومی اسمبلی میں ہنگامہ آرائی کیوں ہوئی؟ اصل وجہ سامنے آگئی، حکومت نےاپوزیشن کیخلاف جارحانہ رویہ اپنانےکا فیصلہ کرلیا،کپتان نےکھلاڑیوں کوفری ہینڈ دےدیا،علی زیدی کااپوزیشن کوکھلا چیلنج "بول سکوتوبول لو "کانعرہ لگادیا۔

تفصیلات کے مطابق قومی اسمبلی کااجلاس ہنگامہ آرائی اورشورشرابےکی نذرہوگیا،وزیراعظم عمران خان نے سابق صدر آصف علی زرداری سمیت کسی بھی رکن قومی اسمبلی کے پروڈکشن آرڈر جاری نہ کرنے کی ہدایت کی ہے،وزیراعظم کا کہنا تھا کہاپوزیشن والے چور ڈاکو ہیں، دنیا میں کہیں مجرم پروڈکشن آرڈر پر ایوان میں آکر حکومت اور وزیراعظم کے خلاف تقریریں نہیں کرتے، آصف زرداری سمیت کسی کے بھی پروڈکشن آرڈر جاری نہیں ہوں گے۔

وفاقی وزیر برائے میری ٹائم افیرز علی زیدی کا کہناتھا کہ اپوزیشن نے نو، دس مہینےجو کیا اس کا جواب ہم دینگے، انہوں نے کہا کہ جب وزیراعظم یا حکومتی رہنما کوئی بات کرتا ہے تو اپوزیشن شور شرابہ کرتی ہے،الٹی سیدھی باتیں کرتے ہیں، ان کا مزید کہناتھا کہ وہ گانا 'روک سکو تو روک لو ' اب اپوزیشن کو چیلنج ہے اب' بول سکو تو بول' اپوزیشن کو جواب دینے کا وقت آگیا۔

قومی اسمبلی اجلاس کے دوران قائد حزب اختلاف شہباز شریف نے آصف علی زرداری اور خواجہ سعد رفیق کے پروڈکشن آرڈر جاری کرنے کا مطالبہ کیا تو حکومتی اراکین کی جانب سے شور شرابا شروع کردیا گیا جس پر اپوزیشن اراکین نے بھی بھرپور جواب دیا،جبکہ اپوزیشن ارکان اسپیکرسےآصف زرداری اور خواجہ آصف کے پروڈکشن آرڈرکامطالبہ کرتے رہے۔

شہبازشریف کی جانب سےآصف زرداری اور خواجہ آصف کے پروڈکشن آرڈرکےمطالبےپراسپیکرنے کہاکہ وہ اس پرقانونی رائے لے رہے ہیں،اس دوران ایوان میں شورشراباجاری رہا،اسپیکرقومی اسمبلی ارکان کوخاموش رہنےکی ہدایت کرتے رہے لیکن کسی نے ان کی بات نہ مانی ،جس پر انہوں نے بےبس ہوکراجلاس ملتوی کردیا۔

اپوزیشن لیڈر اجلاس سے خطاب کے دوران اپنی حکومت کے کارنامے بھی گنواتے رہے، شہباز شریف کا کہنا تھا کہ تبدیلی سرکار نے غریب عوام کا خون کردیا، مہنگائی سے لاکھوں لوگ بھوکے مررہے ہیں

اظہر تھراج

Senior Content Writer