حمزہ شہباز کی غیر نمونہ نمبر پلیٹ بی ایم ڈبلیو گاڑی میں نیب آفس آمد


لاہور(24نیوز) شریف خاندان کے گرد گھیرا مزید تنگ ہونے لگا، وزیر اعلیٰ پنجاب کے بیٹے اور نون لیگ کے سینئر رہنما حمزہ شہباز نیب لاہور میں پیش ہوگئے،نیب ٹیم نے ان  سےصاف پانی کمپنی سکینڈل سے متعلق پوچھ گچھ کی۔

تفصیلات کے مطابق پاکستان مسلم لیگ ن سے منتخب ایم این اے اور شہباز  شریف کے صاجزادے  حمزہ شہبازآج نیب میں پیش ہوئے، نیب نے کچھ دن پہلے ان کو نوٹس جاری کیا تھا جس میں ان کو بروز جمعہ طلب کیا گیا تھا۔

یہ بھی پڑھیں: نوازشریف،مریم اورکیپٹن صفدراحتساب عدالت کو بیان ریکارڈ نہ کرواسکے

نیب کی جانب سے جاری کردہ نوٹس میں کہا گیا تھا کہ حمزہ شہباز شریف نے صاف پانی کی کئی اہم میٹنگز میں حصہ لیا اور کئی مقامات پر واٹر فلٹریشن پلانٹ لگانے کی غیر قانونی ہدایات کیں۔ پیشی کے بعد حمزہ شہباز نے میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے کہ میں صاف پانی کیس میں بورڈ آف ڈائریکٹرز کا حصہ نہیں۔ پانچ میٹنگز میں حصہ لیا تھا، اسی وجہ سے بلایا گیا۔ 18 سال کا تھا جب چھ ماہ جیل کاٹی۔ 1999 میں مشرف نے مارشل لاء لگایا۔ 10 سال تک نیب کے دفتر کے چکر لگاتا رہا مگر کوئی کرپشن ثابت نہیں ہوئی۔

انکا کہنا تھا کہ زرداری صاحب کے سوئس بنک کھاتوں کی حقیقت کوئی نہیں بھولا، جہانگیر ترین قرضہ معاف جبکہ علیم خان قبضہ مافیا ہیں۔عمران خان کی میٹرو بس پر دھول اڑ رہی ہے جبکہ یہاں میٹرو ٹرین بھی چلا دی گئی ہے۔

حمزہ شہباز کا کہنا تھا کہ 2018 کے الیکشن میں عوام احتساب کریں گے اور مسلم لیگ بھاری اکثریت سے جیتے گی، نیب کے دوبارہ بلانے پر بھی آؤں گا۔
 جبکہ یم ا ین اےحمزہ شہبازکی بی ایم ڈبلیو گاڑی میں نیب آفس پیش ہوئے۔ ذرائع کے مطابق حمزہ شہباز کی گاڑی کو لگا نمبر ایکسائز میں رجسٹرڈ نہیں۔ حمزہ شہباز کی گاڑی پر لگی نمبرپلیٹ بھی غیر نمونہ ہے۔ گاڑی پرایل ای 4554 نمبرکی بوگس پلیٹ لگی ہوئی تھی۔ 2014میں نمبرکسی گاڑی کونہیں لگا۔ ایل ای 4554 کسی بی ایم ڈبلیو کو نہیں لگایا گیا۔

وقار نیازی

سٹاف ممبر، یونیورسٹی آف لاہور سے جرنلزم میں گریجوایٹ، صحافی اور لکھاری ہیں۔۔۔۔