تحریک لبیک کو مزید 24 گھنٹوں کی مہلت، آپریشن کی تیاریاں مکمل

تحریک لبیک کو مزید 24 گھنٹوں کی مہلت، آپریشن کی تیاریاں مکمل


اسلام آباد (24 نیوز): تحریک لبیک کا اسلام آباد میں دھرنا طول پکڑ گیا، اسلام آباد ہائیکورٹ کے احکامات کے باوجود مظاہرین بدستو ر اپنے مطالبات پر ڈٹے بیٹھے ہیں، فاقی وزیر داخلہ احسن اقبال نے مذاکرات کے ذریعے دھرنا ختم کرانے کی آخری کوشش کرتے ہوئے انتظامیہ کو آپریشن 24 گھنٹے کیلئے موخر کرنے کی ہدایت کر دی،  کہتے ہیں عدالتی فیصلے پر عمل درآمد کرانا قانونی تقاضا ہے، خونہ خرابہ نہیں چاہتے۔

ختم نبوت کے قانون میں ترمیم حکومت کے گلے پڑ گئی، تحریک لبیک تیرہ روز سے اسلام آباد اور روالپنڈی کے سنگم فیض آباد انٹرچینج پر حکومت کے خلاف دھرنا دئیے بیٹھی ہے۔ حکومت کی دی گئی  ڈیڈ لائن بھی ختم ہوچکی ہے، اسلام آباد ہائیکورٹ نے بھی دھرنے ختم کرانے کا حکم دیا، جسے دھرنے والوں نے نظر انداز کر دیا۔

عدالتی حکم پر عمل درآمد کے لئے وزارت داخلہ بھی میدان میں آگئے ہیں، وزیر داخلہ نے معاملے کو مذاکرات سے حل کرنے کی آخری کوشش کا فیصلہ کیا، دھرنے والوں کے خلاف آپریشن 24 گھنٹے کیلئے موخر کرنے کی ہدایت کر دی۔

 احسن اقبال کہتے ہیں کہ ختم نبوت قانون پاس ہوچکا، دھرنے کا اب کوئی جواز نہیں؟ مذاکرات کی ناکامی کی صورت میں آپریشن کا آپشن بھی موجود ہے، رینجرز اور ایف سی کے دستے مظاہرین کا محاصرہ کئے ہوئے ہیں، کسی بھی ہنگامی صورتحال سے نمٹنے کے لئے ایمبولینسز اور بکتر بند گاڑیاں بھی موجود ہیں، آس پاس کے رہائشی علاقوں کے مکینوں کو گھروں میں رہنے کی ہدایت کر دی گئی ہے، اسپتالوں میں بھی ایمرجنسی نافذ ہے۔