درآمدی اشیاء کی قیمتوں میں اضافہ

درآمدی اشیاء کی قیمتوں میں اضافہ


اسلام آباد ( 24 نیوز ) پی ٹی آئی حکومت نے عوام پر 100 ارب روپے کا اضافی بوجھ ڈال دیا، سینکڑوں درآمدی اشیاء پر ریگولیٹری ڈیوٹیز لگا دی گئیں۔ ملک بھر میں مہنگائی کا سونامی آگیا۔ 

ایف بی آر نے 570 ایمپورٹڈ اشیاء پر ریگویٹر ڈیوٹیز لگا دی، جس سے کھانے پینے کی اشیاء سمیت روز مرہ استعمال کی سینکڑوں اشیاء   کی قیمتوں میں ہوشربا اضافہ ہوگیا۔ ایف بی آر نے منی بجٹ کے بعد 570 اشیاء پر ریگولیٹری ڈیوٹیز بڑھانے کا نوٹیفکیشن جاری کردیا ہے، جس کے مطابق پولٹری، فش اور ڈیری مصنوعات پر 10 فیصد ریگولیٹری ڈیوٹی لگا دی گئی جبکہ دودھ اور کریم پر 25 فیصد ریگولیٹری ڈیوٹی لگادی گئی اور دہی پر 20 فیصد، پنیر پر 50 فیصد اور شہد پر 30 فیصد ریگولیٹری ڈیوٹی عائد کر دی گئی ہے۔

نوٹیفکیشن کے مطابق ایمپورٹڈ پھلوں اور سبزیوں پر 10 فیصد ریگولیٹری ڈیوٹی لگا دی، ایمپورٹڈ کوکونٹ اور ڈرائی فروٹس پر 25 فیصد جبکہ چیریز اور آڑو پر 45 فیصد ریگولیٹری ڈیوٹی لگا دی گئی۔ نوٹیفکیشن کے مطابق میدا، سوجی اور سویوں پر 25 فیصد ریگولیٹری ڈیوٹی عائد کردی گئی۔ چاکلیٹ پر 20 فیصد، پیسٹری، کیک اور بسکٹ پر 20 فیصد ریگولیٹری ڈیوٹی عائدکر دی گئی جبکہ پائن ایپل پر 40 فیصداور جوسز پر 60 فیصد جبکہ آئیس کریم پر 20 اور منرل واٹر پر 30 فیصد ریگولیٹری ڈیوٹی عائد دی گئی۔

پرفیوم، میک اپ اور شیونگ کے سامان پر 50 فیصد ریگولیٹری ڈیوٹی لگا دی گئی۔ لیدر مصنوعات پر 30 فیصد، جوتوں پر 40فیصد جبکہ سرامکس مصنوعات پر 40 فیصد ریگولیٹری ڈیوٹی لگا دی گئی۔ نوٹیفکیشن کے مطابق الیکڑک مصنوعات پر 30 فیصد، ایل سی ڈی اور ایل ای ڈی پر 40فیصد اور سی کے ڈی کٹس پر 40 فیصد ریگولیٹری ڈیوٹی لگا دی گئی۔ نوٹیفکیشن کے مطابق سم کارڈز پر 5 فیصد ریگولیٹری ڈیوٹی لگا دی گئی، سائیکل پر 10 فیصد ریگولیٹری ڈیوٹی لگا دی گئی اور سیگرٹ پر 30 فیصد جبکہ پان کے پتوں پر 400 روپے فی کلو ریگولیٹری ڈیوٹی لگا دی گئی۔

واضح رہے کہ ایکسپورٹ کی گئی پراڈکٹس کی قیمتوں میں اضافہ ہو نے جا رہا ہے جو کہ عام آدمی کی پہنچ سے دور ہو جائیں گی، جس سے مہنگائی میں بھی اضافہ ہوگالہذا صارفین کو پاکستانی پراڈکٹس  کو مدنظر رکھتے ہوئے خریدنی چاہیں۔