لوڈشیڈنگ کی ذمہ دار کے الیکٹرک ہے:نیپرا


اسلام آباد(24نیوز) قومی اسمبلی کے کیبنٹ سیکریٹریٹ میں نیپرا کو طلب کرلیاگیا،نیپرا حکام کا کہنا ہے کہ کراچی میں گھریلو صارفین کو 12 گھنٹے اور صنعتی سیکٹر کو 6 گھنٹوں کی لوڈشیڈنگ کا سامنا ہے۔

نیپرا کے مطابق کراچی میں لوڈشیڈنگ کی ذمہ دار کے الیکٹرک ہے۔ نیپرا نے کمیٹی کو بریفنگ میں بتایا کہ اس وقت کے الیکٹرک کو 600 میگاواٹ شارٹ فال کا سامنا ہے اور اس کی وجہ فرنس آئل پر پاور پلانٹ نہ چلانے اور 5 ماہ سے بجلی گھر بند ہونا ہے۔

یہ بھی پڑھیں:بے نظیر بھٹو ائیر پورٹ پر جھگڑا،خواتین نے لاتوں، مکوں کا آزادنہ استعمال کیا 

  ممبر نیپرا کے مطابق کے الیکٹرک کا سوئی سدرن گیس کمپنی سے کوئی معاہدہ نہیں پھربھی اتھارٹی نے کے الیکٹرک کو 190 ایم ایم سی ایف گیس دینے کی ہدایت کی ہے۔

یہ بھی پڑھیں:نریندرمودی سزا کا حقدار،دینا میں بھارت کو جمہوریہ خوف قرار دے دیا گیا 

 اسد عمر کا کہناتھا کہ سندھ سے پیدا ہونے والی گیس اور درآمد کی جانے والی گیس پنجاب کو دی جا رہی ہے۔ کے الیکٹرک کو آر ایل این جی کیوں نہیں دی جا رہی۔ چیرمین کمیٹی کے سوال پر بتایا گیا کہ کے الیکٹرک ماہانہ 12 ارب روپے بلوں کے زریعے صارفین سے وصول کرتی ہے۔

یہ بھی پڑھیں:مسلم لیگ ن نےنوبیاہتا جوڑوں کو دھوکا دے دیا 

 ممبر کمیٹی علی رضا عابدی کا کہنا تھا کہ کے الیکٹرک میں بڑا مافیا سرگرم ہے جس کے آگے نیپرا نے بھی ہتھیار ڈالے ہوے ہیں۔کمیٹی نے کے الیکٹرک کو فوری طور پر فرنس آئل پر پاور پلانٹس چلانے کی سفارش کی ہے تاکہ عوام کو لوڈشیڈنگ سے نجات دلائی جا سکے۔