پنجاب بھرکےشعبہ صحت کی نجکاری کافیصلہ

پنجاب بھرکےشعبہ صحت کی نجکاری کافیصلہ


( 24نیوز ) پنجاب کےہسپتال اب سرکارنہیں ٹھیکیدارچلائیں گے،ٹیچنگ ہسپتالوں کےبعدپنجاب کےڈسٹرکٹ،تحصیل ہسپتال اورمراکزصحت کی نجکاری کافیصلہ کرلیا گیا۔

تفصیلات کے مطابق ٹیچنگ ہسپتالوں کےبعدپنجاب بھرکےشعبہ صحت کی نجکاری کافیصلہ کیاگیا،ایم ٹی آئی ایکٹ کی کوششوں کےبعدریجنل ہیلتھ اتھارٹیزکےقیام کامنصوبہ تشکیل دے دیا گیا،بنیادی ودیہی مراکزصحت تحصیل اورڈسٹرکٹ ہسپتالوں میں ٹھیکیداری نظام ہوگا۔

ذرائع کا کہناتھا کہ محکمہ پرائمری اینڈسیکنڈری ہیلتھ نےڈرافٹ کی تیاری شروع کردی،پیرامیڈیکس،نرسزاورڈاکٹرزکی صرف کنٹریکٹ پربھرتیاں ہوں گی،ریجنل ہیلتھ اتھارٹیزکوانتظامی ومالی مکمل خودمختاری حاصل ہوگی جبکہ شعبہ صحت میں سرکاری ملازم کادرجہ ختم کردیاجائےگا۔

نجکاری کےتحت علاج معالجہ کومکمل طورپرپرائیوٹائزکیاجائےگا،پہلےمرحلےمیں کلینیکل ٹیسٹوں کی قیمتیں 2 سے 4 گناتک بڑھادی گئیں،کلینیکل ٹیسٹوں کےریٹس میں اضافہ ہیلتھ فسیلیٹزکی آمدنی بڑھانےکیلئےکیاگیا،منصوبےمیں تحصیل ڈسٹرکٹ ہسپتالوں کےمالی بوجھ کوآمدنی سےکم کرناشامل کیا گیا،قبل ازیں کےپی کےمیں ریجنل ہیلتھ اتھارٹیزکابل منظوری کےمراحل میں ہے۔

مریضوں کی جانب سے حکومت سے میڈیکل ٹیسٹوں کی فیسوں میں واپسی کا مطالبہ کیا گیا،ان کا کہناتھا کہ حکومت عام عوام کے لیے کسی قسم کی سہولت نہیں دی رہی،ہسپتالوں میں ادویات نہیں میڈیکل ٹیسٹ بھی مہنگے کر دئیے گئے ہیں۔