ایف بی آر نے ٹوبیکو سیکٹر کو اربوں روپے کا ریلیف فراہم کر دیا


اسلام آباد(24نیوز) ایف بی آر نے ٹوبیکو سیکٹر کو اربوں روپے کا ریلیف فراہم کر دیا، بین الاقوامی قوانین کے تحت ہر قسم کی سگریٹ پر 70 فیصد ایکسائز ڈیوٹی ادا کرنا لازمی ہے، لیکن ایف بی آر فیڈرل ایکسائز ڈیوٹی کی مد میں سگریٹ ساز اداروں سے 57 فیصد ٹیکس وصول کر رہی ہے۔
تفصیلات کے مطابق دنیا بھر میں سگریٹ نوشی کی حوصلہ شکنی کیلئے اقدامات کئے جارہے ہیں، پاکستان میں ایف بی آر نے ٹوبیکو سیکٹر کو اربوں روپے کا ریلیف دے رکھا ہے، سگریٹس کمپنیوں کو ٹیکس کی مد میں بھاری دے دی۔
بین الاقوامی قوانین کے مطابق سگریٹ پر 70 فیصد ایکسائز ڈیوٹی لازمی ہے، لیکن ایف بی آر نے سگریٹس پر فیڈرل ایکسائز ڈیوٹی کی شرح 5.7 5 فیصد مقرر کر رکھی ہے۔ ملٹی نیشنل کمپنیوں کے مختلف برانڈز کے سگریٹس پر 20 سے 30 روپے تک رعایت دے دی گئی۔
فیڈرل کمیشن برائے انسداد تمباکو نوشی کے تحت ایکسائز ڈیوٹی کم سے کم شرح 70 فیصد ہونی چاہئے، اس کے برعکس ایف بی آر نے مختلف برانڈز کے سگریٹس پر ایکسائز ڈیوٹی کی شرح 50 سے 66 فیصد تک مقرر کی ہے، ایف سی ٹی سی قانون کے مطابق تمام برانڈز کے سگریٹس پر ٹیکس کی شرح ہونی چاہئے، ذرائع کے مطابق ایف بی آر ملٹی نیشنل کمپنیوں کو کم سے کم 30 ارب روپے کا ریلیف دیا، یکساں شرح ٹیکس سے ایف بی آر کو 60 ارب روپے کی اضافی آمدن ہوسکتی ہے۔

اظہر تھراج

صحافی اور کالم نگار ہیں،مختلف اخبارات ،ٹی وی چینلز میں کام کا وسیع تجربہ رکھتے ہیں