چھ سالہ ننھی عاصمہ کے قتل کیس کا فیصلہ آ گیا


ملتان (24 نیوز) انسدادِ دہشت گردی کی عدالت نے دنیا پورکی چھ سالہ عاصمہ کے ساتھ ہونے والی زیادتی اور بعد ازاں قتل ہونے کے حوالے سے کیس کا فیصلہ سنا دیا ہے۔

زیادتی اورقتل کیس میں ملزم علی حیدر کو چار بار سزائے موت کا فیصلہ سنادیا۔ ملزم پر25 لاکھ جرمانہ بھی عائد گیا جبکہ اسے بتیس سال قید بامشقت بھی بھگتنا پڑے گی۔فیصلہ جج ملک خالد محمود نے سنایا۔

یہ بھی پڑھئے:نوجوانوں کو برہنہ کر کے بہیمانہ تشدد،ویڈیو بنا کر سوشل میڈیا پر ڈال دی

عدالت نے ایک ہی دن میں فیصلہ کرتے ہوئے چھ سالہ ننھی عاصمہ کے ملزم کو انجام تک پہنچا دیا۔چھ سالہ ننھی عاصمہ سے زیادتی اور قتل کرنے والے ملزم کو سزا سنا دی  گئی۔ ملزم کو چار مرتبہ سزائے موت سنائی گئی جبکہ دس لاکھ روپے جرمانہ ادا کرنے کا حکم بھی سنایا گیا۔

انسداد دہشت گردی کی خصوصی عدالت نمبر 1 کے جج ملک خالد محمود نے ملزم کے خلاف فیصلہ سنایا۔ عدالت، میں ایک ہی دن 18 گواہوں کے بیانات قلمبند کیے گئے۔

عدالت نے ملزم علی حیدر پر ایک ہی دن میں فرد جرم عائد کر کے گواہان کے بیانات اور وکلاء کی بحث کے بعد ایک ہی دن میں فیصلہ سنا دیا۔

ضرور پڑھئے: پانچ سالہ بچہ انسانی درندگی اور سفاکیت کا نشانہ بن گیا

واضح رہے کہ ملزم کے خلاف 19 فروری کو ننھی عاصمہ کو زیادتی کا نشانہ بنانے اور قتل کرنے کا مقدمہ درج کیا گیا تھا۔ ایف آئی آر میں دہشت گردی کی دفعہ7 اے ٹی اے سمیت 302، 201 اور 511 ابلیغ 376 کی دفعات شامل کی گئی تھیں۔