نیوز ی لینڈ کے پارلیمنٹ میں تلاوت قرآن کی گونج

نیوز ی لینڈ کے پارلیمنٹ میں تلاوت قرآن کی گونج


ویلنگٹن( 24نیوز ) کرائسٹ چرچ میں مساجد میں فائرنگ سے اسلام کے پیغام کو روکا نہ جاسکا بلکہ اسلام کا پیغام نیوزی لینڈ کی پارلیمنٹ میں جا پہنچا،کیوی پارلیمنٹ قرآن مجید کی صدا سے گونج اٹھا،کیوی وزیر اعظم بھی مسلمانوں کے رنگ میں رنگ گئیں۔

ضرور پڑھیں:جگن@22,9نومبر 2019

عالمی میڈیا کے مطابق کیوی پارلیمنٹ کے  اجلاس کا تاریخ میں پہلی مرتبہ تلاوت قرآن پاک سے آغاز کیا گیا،کیوی وزیر اعظم جیسنڈا آرڈرن جب تقریر کرنے لگیں تو انہوں نے ’’ السلام و علیکم ‘‘سے آغاز کیا۔انہوں نے اپنے خطاب کے دوران کرائسٹ چرچ میں دہشتگردی کی مذمت کی ۔

یاد رہے کہ 15 مارچ کو  نیوزی لینڈ کے شہر کرائسٹ چرچ  کی دو مساجد میں دہشت گردانہ حملے کے نتیجے میں 9 پاکستانیوں سمیت 50 افراد شہید اور درجنوں  زخمی ہوئے تھے۔

 

مسلمان اس جمعہ کی نماز ادا کریں ہم ان کی حفاظت کے لیے کھڑے ہوں گے: وزیراعظم جیسنڈا 

 وزیراعظم جیسنڈا کا کہنا ہے کہ مسلمان اس جمعہ کی نماز ادا کریں ہم ان کی حفاظت کے لیے کھڑے ہوں گے۔ انہوں نے کہا کہ  نیوزی لینڈ  کی سرزمین پر دہشتگردی کا واقعہ دوبارہ نہیں ہونے دیں گے۔ وزیراعظم  نیوزی لینڈ  جسینڈا نے کہا کہ میں یہاں دہشت گردی کرنے والے کا نام لینا بھی پسند نہیں کروں گی اور آپ لوگ کبھی مجھ سے اس کا نام بھی نہیں سنیں گے۔ 

وہ ایک دہشت گرد ہے، ایک مجرم ہے اور وہ ایک انتہا پسند ہے لیکن وہ بے نام ونشان رہے گا۔ ہمیں ان لوگوں کا نام لینا چاہئیے جنہوں نے اپنی جان گنوا دی بجائے اس کے کہ اس کا نام لیا جائے جس نے جان لی۔ ہم  نیوزی لینڈ  میں اسے کچھ بھی نہیں دیں گے ، یہاں تک کہ نام بھی نہیں۔ 

وزیراعظم  نیوزی لینڈ  جسینڈا نے کہا کہ نعیم راشد جن کا تعلق پاکستان سے ہے۔جو مساجد پر اندھا دھند فائرنگ کرنے والے حملہ آور سے بندوق چھیننے کے دوران میں شہید ہو گئے ۔ وزیراعظم نے کہا کہ نعیم راشد نے مسجد کے اندر عبادت کرنے والے لوگوں کی جان بچانے کے لیے اپنی جان گنوا دی۔ انہوں نے مزید کہا کہ مساجد پر حملوں میں مرنے والوں کا تعلق اس مذہب سے تھا جو کشادہ دل کے ساتھ سب کا استقبال کرتے ہیں۔ 

جیسے 71 سالہ مسلمان نے دہشت گرد کو نہ جانتے ہوئے مسجد کا دروازہ کھولا اور اسے خوش آمدید کہا اسی طرح  نیوزی لینڈ  تمام امن پسندوں کو خوش آمدید کہتا ہے۔ انہوں نے کہا کہ مسلمان اس جمعہ کی نماز پڑھیں گے، ہم مسلمانوں کی حفاظت اور ان کے ساتھ کھڑے ہوں گے۔ انہوں نے متاثرین کو یقین دہانی کروائی کہ انصاف کے تقاضے پورے اور دہشت گرد کو قرار واقعی سزا دی جائے گی۔