پی ٹی آئی میں فارورڈ بلاک بننے کا خدشہ

پی ٹی آئی میں فارورڈ بلاک بننے کا خدشہ


کراچی(24نیوز) پیپلزپارٹی میں فارورڈبلاک دیکھنے کے خواہش مندوں کواپنی پارٹی میں فارورڈ بلاک بننے کا خدشہ پیدا ہوگیا۔ پی ٹی آئی سندھ میں شدیداختلافات منظرعام پرآگئے۔

 پاکستان تحریک انصاف سندھ اسمبلی میں شدید مشکلات سے دوچار،  پارٹی کے اراکین اسمبلی میں شدید اختلافات سامنے آگئے۔ اراکین اسمبلی کی اکثریت پی ٹی آئی اپوزیشن لیڈر فردوس شمیم نقوی سے ناراض ہیں۔ پی ٹی آئی ایم پی ایز واٹس اپ گروپ کی چیٹ اور وائس نوٹ نے سب کھول کر رکھ دیا ۔

ناراض اراکین کے مطابق اسمبلی میں پارٹی کا جی ایٹ گروپ متحرک ہے۔ جو مخصوص اراکین کو اہمیت دیتا ہے، اراکین کا کہنا تھا کہ مجبور کیا جارہاہے کہ بغاوت کی آواز بلند کریں ۔ناراض اراکین کے مطابق کارکن سے ایم پی اے بننے کے بعد تک انہیں ٹیشوپیپرکی طرح استعمال کیا جارہاہے۔

ممبر سندھ اسمبلی کے مطابق ہم کارکن تھے جب بھی ٹشو پیپر تھے اور ایم پی اے بن گئے سات آٹھ لوگوں کے ہاتھوں محصور بن گئے،تمام ایم پی ایز سر جوڑ کر بیٹھیں لائحہ عمل بنائیں کراچی والوں نے عمران خان کے نام پر ووٹ دیا ہے ۔

سٹاف ممبر، یونیورسٹی آف لاہور سے جرنلزم میں گریجوایٹ، صحافی اور لکھاری ہیں۔۔۔۔