رمضان المبارک میں سکیورٹی کے پیش نظر مسجد الحرام میں ڈرونز کا استعمال

رمضان المبارک میں سکیورٹی کے پیش نظر مسجد الحرام میں ڈرونز کا استعمال


ویب ڈیسک: سائنس اور ٹیکنالوجی اپنی بلندیوں کو چھو رہی ہے،یہ ہرشعبہ زندگی میں انسانوں کیلئے معاون ثابت ہورہی ہے،اس نے صدیوں کا سفر دنوں میں قید کیا ہے تو دنیا کے ایک کونے سے دوسرے کونے میں بیٹھے انسان کو سوشل میڈیا کے ذریعے ملادیا ہے۔

سائنسدانوں کی ایک اہم ایجاد ڈرون بھی ہے جس کے بارے میں عام لوگوں کا خیال ہے کہ یہ صرف بندے مارنے کے لیےاستعمال ہوتا ہے لیکن یہ غلط ہے کیونکہ جہاں امریکی اس سے بندے مارتے ہیں دنیا اس سے فلاح کے کام لے رہی ہے،موجودہ سائنس اور ٹیکنالوجی کے دور میں ہر شعبہ میں نت نئے اور جدید ڈرونز کا استعمال بڑھتا جارہا ہے، اسی مناسبت سے سعودی عرب کے مقدس شہر مکہ مکرمہ میں واقع مسجد الحرام میں بھی ڈرونز دیکھے گئے۔

یہ بھی پڑھیں: اسرائیلی فوج نے فلسطینیوں کو مسجد اقصٰی میں نماز جمعہ ادا نہ کرنے دی

اس رمضان المبارک کے دوران پہلی مرتبہ زائرین کو منظم کرنے کے لیے ڈرونز کا استعمال کیا جائے گا،سعودی گزٹ کی ایک رپورٹ کے مطابق عمرہ فورسز کے ڈپٹی کمانڈر نے انٹرویو میں بتایا کہ عام زائرین اور عازمین عمرہ کے ہجوم کے انتظام کے لیے وضع کردہ اس منصوبے میں سیکیورٹی، تنظیمی اور انسانی پہلو شامل ہیں۔

انہوں نے بتایا کہ جو زائرین اور عازمینِ عمرہ کسی قسم کی گڑ بڑ ظاہر کریں گے، انھیں مسجد الحرام میں داخل ہونے کی اجازت نہیں دی جائے گی اور یہ اقدام ان کے اور دوسروں کے تحفظ کے پیش نظر کیا جائے گا۔

یہ بھی پڑھیں: دنیا میں کتنے لوگ انٹرنیٹ استعمال کرتے ہیں؟ دلچسپ رپورٹ سامنے آگئی

انہوں نے مزید بتایا ہے کہ زائرین یا عازمین عمرہ کو ان کے سامان سمیت الحرم پلازہ میں داخل نہیں ہونے دیا جائے گا۔

واضح رہے کہ مسجد الحرام میں لوگوں کی نقل وحرکت کی نگرانی کے لیے تقریباً 2500 کیمرے نصب ہیں اور اب ڈرونز اور سیکیورٹی طیارے بھی فضا میں گردش کرتے نظر آئیں گے۔