’’ماں کی موت کے درد جیسا کوئی دردنہیں‘‘

’’ماں کی موت کے درد جیسا کوئی دردنہیں‘‘


لندن(24نیوز) شہزادی ڈیانا  کو دنیا سے گئے 23سال ہوگئے لیکن ان کی اولاد کیلئے ان کے بچھڑنے کا غم آج بھی تازہ ہے،ان کی اولاد انہیں یاد کرکے آج بھی غم زدہ ہوجاتی ہے۔

ڈیوک آف کیمبرج شہزادہ ولیم کا کہنا ہے کہ ان کی والدہ شہزادی ڈیانا کی موت ان کے لیے ایسی تکلیف تھی جو اس سے پہلے کبھی انھوں نے محسوس نہیں کی تھی۔

ایک ٹی وی انٹرویو میں ان کا کہنا تھا کہ مشکل وقت میں جذبات کا برملا اظہار نہ کرنے کی بات اپنی جگہ مگر یہ بھی ضروری ہے کہ آپ اپنے جذبات کا اظہار کریں اور تھوڑا ریلیکس محسوس کریں کیونکہ ہم روبورٹ نہیں ہیں،  فضائی ایمبولینس میں بطور پائلٹ کام کرنا ایسے ہے جیسے ’موت سر پر کھڑی‘ ہو۔

وہ مزید کہتے ہیں کہ اپنی والدہ کو کھو دینے کا صدمہ برداشت کرنے کے بعد وہ ان افراد کا درد محسوس کر سکتے ہیں جنھوں نے اپنے پیاروں کی موت کا غم برداشت کیا ہے۔میں نے اس بارے میں بہت سوچا ہے اور میں یہ سمجھنے کی کوشش کر رہا ہوں مجھے ایسا کیوں محسوس ہوتا ہے۔ مگر میرا خیال ہے کہ جب آپ عمر کے کسی بھی حصے میں خاص کر نوعمری میں ایسے صدمے سے گزرتے ہیں تو آپ ایک ایسی تکلیف محسوس کرتے ہیں جو آپ نے پہلے کبھی محسوس نہ کی ہو۔ اور یہ میں بہت بہتر جانتا ہوں۔

یاد رہے شہزادی ڈیانا سنہ 1997 میں کار حادثے میں ہلاک ہوئیں تھیں۔

اظہر تھراج

Senior Content Writer