سینیٹ میں وزراء کی عدم موجودگی پراپوزیشن جماعتوں کا احتجاج

سینیٹ میں وزراء کی عدم موجودگی پراپوزیشن جماعتوں کا احتجاج


اسلام اباد(24نیوز) سینیٹ میں وزراء کی عدم موجودگی پراپوزیشن جماعتوں کا احتجاج ایوان سے واک آؤٹ کیا۔ چئیرمین نے سخت برہمی کا اظہار کیا اور وزرا کی عدم حاضری پر طلال چوہدری کے ذریعے وزیر اعظم کو پیغام بھجا۔ چیرمین سینٹ نے چینی زبان کو قومی زبان بنانے سے متعلق خبروں کی بھی تردید کردی۔

چیرمین سینٹ میاں رضاء ربانی کی صدارت میں شروع ہونے والے اجلاس میں وفاقی وزراء کی کابینہ اجلاس میں جانے کی اجازت مانگنے پر برہمی کا اظہار کیا اور کہا کہ ایوان کی کوئی اہمیت نہیں۔

کابینہ اجلاس کی اہمیت ہے۔ اپوزیشن جماعتوں نے وزراء کے رویے پر احتجاجا ایوان سے واک آؤٹ کر دیا۔ چیرمین سینٹ نے دانیال عزیز کو کہا کہ وزیر اعظم کو میرا پیغام ضرور دیں۔ کہ انکے وزرا ایوان میں موجود نہیں تھے۔ وزرا کی عدم حاضری کے باعث سینیٹ ایجنڈا متاثر ہوا۔

 پاکستان میں ماحول کو آلودہ کرنے والی گیسوں کا اخراج سے متعلق تحریک التوای پر بحث کے دوران سینیٹرز نے کہا کہ ماحولیات کیلئے اس وقت حکومت کچھ نہیں کر رہی۔۔ماحولیاتی آلودگی کی وجہ سے لوگ بیماریوں کا شکار ہورہے ہیں۔

چئیرمین سینٹ رضا ربانی نے وضاحت کی کہ کل چائینیز زبان کو نیشنل لینگویج کا درجہ دینے کی خبریں چلیں وہ غلط تھیں۔ قرارداد میں چائینیز زبان کے فروغ کی بات کی گئی تھی۔ سینٹ کبھی کسی اور زبان کو قومی زبان بنانے کی بات نہیں کر سکتا۔ اجلاس میں باجوڑ سے تعلق رکھنے والے طالب علم احمد شاہ کو کراچی میں بے دردی سے قتل کرنے پرمتعدد سنیٹرز نے  نے رنج اور افسوس کا اظہار کیا۔