سکھر کے پرائمری سکول میں جانوروں نے ڈیرے ڈال لیے

سکھر کے پرائمری سکول میں جانوروں نے ڈیرے ڈال لیے


سکھر (24نیوز) سکھر کے علاقے کندھرا میں گورنمنٹ پرائمری سکول باغ فتح علی شاہ کو ایک سال سے تالے لگ گئے،محکمہ تعلیم کی عدم دلچسپی کے باعث درسگاہ میں جانوروں نے ڈیرے ڈال دیئے۔
تفصیلات کے مطابق سال 1997 میں قائم گورنمنٹ پرائمری سکول باغ فتح علی شاہ میں تقریباً دو سو طالب علموں کی تعلیم کے لئے دو کلاس روم بنائے گئے علاقہ مکینوں کے مطابق ابتدا سے ہی سکول انتظامیہ والدین اور بچوں کو مسائل کا سامنا رہا سکول کے اکلوتے ٹیچر کے انتقال کے بعدسکول مکمل طور پر بند ہوگیا۔
گورنمنٹ پرائمری سکول باغ فتح علی شاہ اور گرلز اسکول کی عمارتیں بھی خستہ حال ہوگئی ہیں یہی وجہ ہے کہ سکول کی چھتوں سے پلستر گرنا روز کا معمول بن گیا اور اب تو دونوں اسکولوں میں تعلیم کی فراہمی بند ہے اور سکول کے احاطے میں جانور گھومتے پھرتے ہیں. دوسری جانب والدین کا کہنا ہے کہ وہ اپنے بچوں کو پڑھانا چاہتے ہیں،محکمہ تعلیم کو گورنمنٹ باغ فتح علی شاہ سمیت دیگر بند 298 اسکولوں میں تعلیم کی بحالی کے لئے اقدامات کرنے کی ضرورت ہے۔
یاد رہے صوبہ سندھ کے اکثر علاقوں میں تعلیمی اداروں کی صورتحال اچھی نہیں ہے،عمارتیں ٹوٹی ہوئی ہیں،بچوں کو پڑھانے کیلئے استاد نہیں ہیں۔
واضح رہے کہ صوبائی حکومت نے تعلیم کی بہتری کیلئے اقدامات بھی اٹھا رکھے ہیں جن کے کچھ جگہوں پر نتائج بھی سامنے آئے ہیں۔