ایک سال کیلئے بیوی بچوں کو خیرباد کہہ دیا: جسٹس میاں ثاقب نثار

ایک سال کیلئے بیوی بچوں کو خیرباد کہہ دیا: جسٹس میاں ثاقب نثار


لاہور (24نیوز) چیف جسٹس سپریم کورٹ جسٹس میاں ثاقب نثار کا کہنا تھا کہ ملک میں صرف قانون کی حکمرانی ہوگی، آئین اور قانون پر عمل درآمد کا وعدہ پورا نہ کیا تو میرا گریبان ہوگا اور آپ کے ہاتھ ہوں گے۔

تفصیلات کے مطابق چیف جسٹس پاکستان ثاقب نثار کا سیمینار سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ کس کس ہیرے اور جج کا نام لوں کیونکہ بینچ کے تمام لوگ ہی دیانتداری اور قابلیت کا بہترین نمونہ ہیں اور سپریم کورٹ آصف سعید کھوسہ کے بغیر نامکمل ہے ، جسٹس اعجاز افضل کے بغیر میرا بنچ نا مکمل ہے ۔ان کا کہناتھا کہ عدلیہ مکمل آزاد ہے،آپ کواس پرفخرہونا چاہیے،وکالت اور ڈاکٹری کے شعبے ہر حوالے سے قابل ستائش ہیں ، بار بنچ کی اور بنچ بار کی طاقت ہے کیونکہ اگر باراوربنچ میں کوئی مفلوج ہوجائے تو ادارہ مفلوج ہوجاتاہے، بار اوربنچ جسم کے دوحصے ہیں،یہ تصورنہیں ہونا چاہیے کہ جسم کا ایک حصہ دوسرے حصے کوکاٹے گا ،فتنہ ختم کرنے والے لوگ بہت اعلیٰ ہوتے ہیں

انہوں نے مزید کہا کہ نے جو ججز اور وکیل عوام کی داد رسی نہیں کرسکتے وہ یہ کام چھوڑ دیں، ان کا کہنا تھا کہ ایک سال کیلئے بیوی بچوں کو خیرباد کہہ دیا ۔