وزارت مذہبی امور تاحال حج پالیسی تشکیل نہ دے سکی

 وزارت مذہبی امور تاحال حج پالیسی تشکیل نہ دے سکی


اسلام آباد (24 نیوز) حج 2019 کی تیاریاں، وزارت مذہبی امور تاحال حج پالیسی تشکیل نہ دے سکی، حج پالیسی تشکیل نہ دینے کی سب سے بڑی وجہ حج کا مہنگا ہونا بتایا جا رہا ہے جبکہ حکومت نے بھی سبسڈی دینے سے انکارکردیا۔

وزارت مذہبی امور کے لئے حج 2019 کی پالیسی کا اعلان کرنا درد سربن گیا۔ تحریک انصاف حکومت حج پر سبسڈی دینے سے متعلق پہلے ہی انکار کرچکی ہے، ذرائع کے مطابق حج 2019 سبسڈی نہ دینے اور ڈالر مہنگا ہونے کی وجہ سے 4 لاکھ تک مہنگا ہونے کا خدشہ ہے۔  گزشتہ حکومت نے سرکاری حج پر جانے والے 1 لاکھ 7 ہزار 526 حاجیوں کو 6 ارب تک غیر اعلانیہ سبسڈی دی تھی جبکہ حج مہنگا ہونے کی دوسری بڑی وجہ ڈالر کی قیمت میں اضافہ بتایا جارہا ہے۔ حج مہنگا ہونے کی ایک اور بڑی وجہ ائیرلائین کمپنیوں کی جانب سے حج کرایوں میں اضافے کا مطالبہ بھی ہے۔

ذرائع کے مطابق سبسڈی ختم کرنے کی صورت میں سرکاری اسکیم کے تحت حج اخراجات 4 لاکھ روپے تک ہونے کا امکان ہے۔  گزشتہ سال 2018 میں جنوبی ریجن کے لئے فی حاجی 2 لاکھ70ہزار جبکہ شمالی ریجن کے لئے فی حاجی 2 لاکھ 80 ہزار ادا کرنے تھے۔