سانحہ ساہیوال میں جاں بحق افراد کی نماز جنازہ ادا

سانحہ ساہیوال میں جاں بحق افراد کی نماز جنازہ ادا


لاہور(24نیوز) لاہور میں سانحہ ساہیوال میں جاں بحق میاں بیوی اور ان کی بیٹی کی نماز جنازہ ادا کر دی گئی۔

محمدخلیل،ان کی اہلیہ نبیلہ اوربیٹی اریبہ کی نمازِ جنازہ میں ہزاروں افرادنے شرکت کی۔   نماز جنازہ  فیروز پور روڈ پر شنگھائی پل کے قریب ادا کی گئی،  اس موقع پر سکیورٹی صورتحال کے پیش نظر راستوں پر پولیس کی اضافی نفری تعینات کی گئی۔ تدفین سے پہلے مقتولین کی رہائش گاہ پر شہریوں کی کثیر تعداد پہنچی، ہر طرف سوگ کا عالم تھا، اہلخانہ پیاروں کو اپنے سے دور جاتا دیکھ کر غم سے نڈھال نظر آئے۔   

دوسری جانب ذیشان کی بھی نماز جنازہ ادا کردی گئی۔واقعہ میں جاں بحق ہونیوالے ذیشان علی کے اہل خانہ غم سے نڈھال ہوگئے۔ساہیوال میں قانون نافذ کرنے والے اداروں کی فائرنگ سے جاں بحق ہونیوالے ذیشان کی میت گھر پہنچنے پر کہرام مچ گیا۔عزیزواقارب اور محلے داروں کی بڑی تعداد سارا دن ذیشان کے گھر موجود رہی، جو ذیشان پر لگے دہشتگردی کے الزام کو مسترد کرتے رہے۔

ذیشان کی بوڑھی والدہ بھی اپنے لختِ جگر کے جانے پر غم زدہ نظرآئی، کہتی ہیں جان سے تو ماردیا اب دہشتگردی کا الزام لگا کر اپنی کرتوتوں پر پردہ ڈالا جارہا ہے۔ مقتول ذیشان کی سات سالہ بیٹی یشفاء والد کو یاد کرتے آبدیدہ نظرآئی جس کا کہنا تھا کہ پاپا مجھے ڈاکٹر بنانا چاہتے تھے، شادی سے جلد واپس آنے کا کہہ کرگئے تھے۔

دن بھر ذیشان کے گھر آنے والوں کا تانتا بندھا رہا، لوگوں نے مطالبہ کیا کہ ملزمان کو کیفرکردار تک پہنچایا جائے۔

سٹاف ممبر، یونیورسٹی آف لاہور سے جرنلزم میں گریجوایٹ، صحافی اور لکھاری ہیں۔۔۔۔