چھیڑ خانی سے منع کرنا خواجہ سرا کی سزائے موت بن گئی

چھیڑ خانی سے منع کرنا خواجہ سرا کی سزائے موت بن گئی


حافظ آباد( 24نیوز )خواجہ سراﺅں کیلئے ملک کی زمین مزید تنگ کردی گئی،حافظ آباد میں شادی کی تقریب میں ڈانس کے دوران چھیڑ خانی سے منع کرنے پر ایک اور خواجہ سر کو ا قتل کردیا گیا۔

تفصیلات کیمطابق خواجہ سرا کو اشفاق نامی شخص نے گولیاں ماریں، خواجہ سرا شادی کی تقریب میں ڈانس کر رہا تھا، خواجہ سرا نے ملزم کو چھیڑ خانی سے منع کیا تھا۔

تقریبات میں خواجہ سراوں کا قتل معمول بن چکا ہے،حافظ آباد کے نواحی علاقے چینیانوالہ میں خواجہ سرا شادی تقریب میں ڈانس کر رہے تھے،چھیڑ خوانی سے منع کرنے پر ملزم اشفاق نے خواجہ سرا ثنا کو فائرنگ کر کے قتل کر دیا۔

پولیس نے لاش قبضے میں لے کر پوسٹ مارٹم کے لیے بھیج دی،پولیس کا کہنا ہے کہ ملزم کی گرفتاری کے لیے چھاپے مارے جا رہے ہیں،جلد گرفتار کر لیا جائے گا۔

 یہ بھی لازمی پڑھیں۔۔۔  سٹی کورٹ کا احاطہ میدان جنگ بن گیا

خواجہ سراوں نے واقعہ کے خلاف احتجاج کیا، چیف جسٹس اور دیگر اعلیٰ حکام سے انصاف کی اپیل کی ہے۔

یاد رہے اس سے قبل خیبر پی کے اور پنجاب کے مختلف شہروں میں بھی خواجہ سراﺅں کو معمولی جھگڑوں پر قتل کیا جا چکا ہے، خیبر پی کے میں تو خواجہ سراﺅں کا مردوں یا عورتوں کے وارڈ میں علاج کرنا بھی معیوب سمجھا جاتا ہے۔