چیئرمین سینٹ کو ہٹانے کیلئے نمبر پورے ہیں، اپوزیشن کا دعوی

چیئرمین سینٹ کو ہٹانے کیلئے نمبر پورے ہیں، اپوزیشن کا دعوی


اسلام آباد(24 نیوز) چیئرمین سینٹ نے اپوزیشن کی ریکوزیشن پر 23جولائی کو سینٹ کا اجلاس طلب کرلیا ،  اپوزیشن کا دعوی ہے کہ چیئرمین سینٹ کا ہٹانے کیلئے نمبر پورے ہیں۔

 چیئرمین سینیٹ نے اپوزیشن کی ریکوزیشن پر23 جولائی کو سینیٹ کا اجلاس تو طلب کر لیالیکن صادق سنجرانی کہتے ہیں چیئرمین وڈپٹی چیئرمین کو ہٹانے کا کوئی طریقہ موجود نہیں، میں ایوان کے تقدس کیلئے لڑرہا ہوں مگراپوزیشن کہتی ہے وہ جمہوریت کے تقدس کیلئے جنگ لڑرہی ہے کیونکہ اس کے پاس چیئرمین سینٹ کوہٹانے کیلئے نمبر پورے ہیں۔

دونوں طرف تقدس کی جنگ ہے مگر نمبر گیم پورے ہونے کا دعوی صرف اپوزیشن کا ہے۔  جن کا کہنا ہے کہ اپوزیشن کےکل کے اجلاس میں 60 ارکان شریک ہوں گے جبکہ ایوان میں تحریک عدم اعتماد کی منظوری کے لیے53 ارکان کی ضرورت ہے۔  لگتا ہے اپوزیشن کا دعوی سچ ہے جب ہی تو مشیر اطلاعات فردوس عاشق کہتی ہیں کہ بحران پیدا ہوگیا ،سینٹ کا وجود خطرے میں ہیں ،اس لیے صدر اپنا اختیار استعمال کرتے ہوئےچیئرمین سینیٹ کا فیصلہ کردیں۔

فردوس عاشق اعوان مشیر اطلاعات ہیں،بحران دیکھ لیا ہوگا مگریہ بحران کسی اور کو نظر نہیں آرہا ، تحریک عدم اعتماد پرووٹنگ سے اگر بحران ہے بھی تو ختم ہوجائے گا یا تو تحریک عدام اعتماد منظور ہوجائے گی یا مسترد،کیا بہتر نہ ہوگا کہ میچ صدرکے دم پر نہیں جمہوریت کے اصولوں کے مطابق کھیلا جائے۔