سینئر اینکر پرسن ڈاکٹر شاہد مسعود کے پروگرام کرنے پرتین ماہ کی پابندی عائد     

سینئر اینکر پرسن ڈاکٹر شاہد مسعود کے پروگرام کرنے پرتین ماہ کی پابندی عائد     


اسلام آباد: قصور کی ننھی زینب قتل کیس میں سینئر اینکر پرسن ڈاکٹر شاہد مسعود ملزم عمران پر لگائے الزام ثابت نہ کر سکے۔

چیف جسٹس کی سربراہی میں تین رکن بنچ نے ڈاکٹر شاہد مسعود کے خلاف مقدمہ کی سماعت کی، سماعت کے دوران چیف جسٹس پاکستان نے ریمارکس دیے کہ ڈاکٹر صاحب نے پھانسی مانگی تھی لیکن ہم وہ نہیں دے رہے۔ ڈاکٹر شاہد مسعود کے وکیل نےکہا کہ ڈاکٹر شاہد مسعود آج اپنے پروگرام میں معافی مانگیں گے تو چیف جسٹس نے ریمارکس دیے کہ ابھی تو یہ بھی نہیں پتہ کہ وہ آج ٹاک شو کرسکیں گے یا نہیں۔ آپ نے عدالتوں کو کمزور سمجھ رکھا ہے  اب یہ پہلے والی عدالتیں نہیں رہیں۔

چیف جسٹس نے کہا کہ تین ایسے قانون لاگو ہوتے ہیں، توہین عدالت، انسداد دہشت گردی اور پیمرا ، فیصلہ اب ہمیں کرنا ہے کہ کون سا قانون لگائیں۔

ڈاکٹر شاہد مسعود نے عدالت میں اپنا معافی نامہ جمع کرایا، عدالت نے معافی نامہ قبول کرتے ہوئے سینئر اینکر پرسن کے پروگرام پر تین ماہ کی پابندی کا حکم سنا دیا۔