حکومت کیخلاف اپوزیشن متحد،عید کے بعد احتجاج کا اعلان



اسلام آباد(24نیوز)ملکی سیاست نیا رخ اختیار کرنے لگی، پیپلزپارٹی کی میزبانی میں اپوزیشن کی بڑی بیٹھک میں حکومت کے خلاف تحریک چلانے کا بڑا فیصلہ، تمام جماعتوں نے عید کے بعد پارلیمنٹ کے اندر اور باہر احتجاج کا اعلان کردیا، اپوزیشن نے آئندہ کا مشترکہ لائحہ عمل طے کرنے کے لئے عید کے بعد مولانا فضل الرحمان کی سربراہی میں اے پی سی منعقد کرنے کا فیصلہ بھی کیا ہے، اپوزیشن رہنماؤں کا کہنا ہے کہ آج کی بیٹھک کا مقصد پاکستان کو بچانا ہے۔۔

بلاول بھٹو کی دعوت افطار اپوزیشن کے غیررسمی اجلاس میں بدل گئی، پیپلزپارٹی کی اعلٰی قیادت کے علاوہ مریم نواز، حمزہ شہباز، شاہدخاقان عباسی، خواجہ آصف، مولانا فضل الرحمان ، آفتاب شیرپاؤ، میرحاصل بزنجو، ایمل ولی خان، لیاقت بلوچ، حکومتی اتحاد، بی این پی مینگل کے جہانزیب جمالدینی اور پی ٹی ایم کے محسن داوڑ اور علی وزیر نے شرکت کی۔

اپوزیشن کے غیررسمی اجلاس کے بعد میڈیا کو مشترکہ بریفنگ دیتے ہوئے چیئرمین پیپلزپارٹی بلاول بھٹو زرداری نے کہا کہ پاکستان کے مسائل اتنے زیادہ ہیں کہ کوئی ایک جماعت اس کا حل نہیں نکال سکتی، ہم یہ بیٹھک آئندہ بھی جاری رکھیں گے، آج تمام جماعتوں نے عید کے بعد پارلیمنٹ کے اندر اور باہر احتجاج کا اعلان کیا ہےجبکہ عید کے بعد مولانا فضل الرحمان کی سربراہی میں ایک اے پی سی بھی ہوگی، ہم تمام ایک پیج پر ہیں آئندہ کی حکمت عملی کا اعلان اے پی سی کے بعد کریں گے۔

مسلم لیگ ن کی مرکزی رہنماء مریم نواز نے کہا کہ سی او ڈی کا پاکستان کو یہ فائدہ ہوا ہے کہ سیاسی جماعتوں نے پانچ سال مکمل کیے، پیپلزپارٹی نے ن لیگ کی حکومت گرانے کی کوشش نہیں کی۔ مولانا فضل الرحمان نے کہا کہ ملکی معیشت بیٹھ رہی ہے اور یہ سب نا اہل لوگوں کے آنے سے ہوا ہے، ہمارا قومی فریضہ ہے کہ اس کشتی کو سنبھالیں، اے پی سی کی تاریخ کا اعلان عید کے بعد کیا جائے گا، آج ہم نے مستقبل کا تعین کیا ہے۔

سابق وزیراعظم شاہدخاقان عباسی کا کہنا تھا کہ سب جماعتوں نے اس بات پر اتفاق کیا کہ یہ حکومت ملک چلا نے میں ناکام ہوئی ہے، 2018 میں متنازعہ الیکشن کا خمیازہ اب مہنگائی کی صورت میں بھگت رہے ہیں، عید کے بعد اے پی سی میں طے کیا جائے گا کہ مستقبل میں کیا حکمت عملی اپنانی ہے۔

اپوزیشن کی مشترکہ پریس بریفنگ سے آفتاب شیرپاؤ،میرحاصل بزنجو،میاں افتخارحسین،ڈاکٹر جہانزیب جمالدینی اور پی ٹی ایم کے محسن داوڑ نے بھی خطاب کیا۔

حکومت مخالف تحریک کے لیے اپوزیشن نے صف بندی شروع کر دی ہے، دونوں جماعتوں کی نوجوان قیادت کی پہلی باضابطہ ملاقات نے مستقبل کی ملکی سیاست کے مدوجزر کا تعین کرنا ہے۔

اظہر تھراج

Senior Content Writer