حکومت اور دھرنا کمیٹی کے درمیان مذاکرات بے نتیجہ ختم

حکومت اور دھرنا کمیٹی کے درمیان مذاکرات بے نتیجہ ختم


 اسلام آباد (24 نیوز): حکومت اور دھرنا کمیٹی کے درمیان مذاکرات بے نتیجہ ختم، حکومت اور علماء مشائخ مذاکرات کے بعد مشترکہ اعلامیہ جاری، راجہ ظفر الحق کمیٹی کی رپورٹ فوری منظر عام پر لانے کا مطالبہ کر دیا، احسن اقبال کہتے ہیں کسی بھی قسم کی جلد بازی نقصان دہ ثابت ہو سکتی ہے۔

 

وزارت مذہبی امور میں مختلف مکاتب فکر کے علماء اور مشائخ اور وفاقی حکومت کے درمیان دھرنا سے متعلق مشاورتی اجلاس ہوا، اجلاس کے بعد مشترکہ اعلامیہ جاری کیا گیا جس میں پیر حسین الدین شاہ کی سربراہی میں کمیٹی شکیل دینے اور ربیع الاول کے احترام میں تحریک لیبک سے دھرنا ختم کی اپیل کی گئی۔

 

حکومت اور دھرنا کمیٹی کے درمیان اس سے پہلے پنجاب ہاوس میں مذاکرات کا ایک دور ہوا مگر بے نتیجہ ، اجلاس کے بعد میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے رکن کمیٹی سید عنایت اللہ شاہ نے کہا کہ اپنے مطالبے سے نہیں ہٹیں گے، وفاقی وزیر خواجہ سعد رفیق کا کہنا تھا کہ وفاقی وزیر زاہد حامد کے استعفیٰ کا کوئی جواز نہیں۔

 

دھرنا قیادت کا موقف ہے کہ جب تک وزیر قانون زاہد حامد اپنے عہدے سے مستعفی نہیں ہوتے دھرنے کا خاتمہ ممکن نہیں۔