وزیراعلیٰ پنجاب کے پروٹوکول کیخلاف تحریک التواءجمع

وزیراعلیٰ پنجاب کے پروٹوکول کیخلاف تحریک التواءجمع


لاہور(24نیوز) وزیراعلیٰ پنجاب پنجاب کی ملتان آمد پر پروٹوکول کے باعث راستے بند ہونے کے خلاف تحریک التواء پنجاب اسمبلی میں جمع کروادی گئی۔

تفصیلات کے مطابق وزیراعلیٰ پنجاب پنجاب کی ملتان آمد پر پروٹوکول کے باعث راستے بند ہونے کے خلاف تحریک التواء پنجاب اسمبلی میں جمع کرادی گئی، تحریک التواء مسلم لیگ ن کی رکن پنجاب اسمبلی عظمیٰ زاہد بخاری کی جانب سے جمع کرائی گئی، تحریک التواء  کے متن میں کہا گیا کہ پروٹوکول کا رونا رونے والے خود پروٹوکول کے رسیا نکلے، وزیراعلی ٰ پنجاب کی ملتان میں شاہانہ آمد پر ان کے پروٹوکول میں سینکڑوں گاڑیاں شامل تھیں ۔

پروٹوکول کے باعث راستے بند ہونے سے عوام کو شدید مشکلات کا سامنا کرنا پڑا، عوام کی وزیراعلیٰ پنجاب  سے ملاقات کی کوشش میں پولیس کے روکنے پر تلخ کلامی کی وجہ سے حالات کشیدہ ہوئے ،ان کو شاہانہ پروٹوکول دیکر ائیرپورٹ سے سرکٹ ہاؤس لایا گیا، سرکٹ ہاؤس جانے والے تمام راستے بیرئیر لگا کر عوام کے لیے بند کردئیے گئے۔

تحریک التواء میں مزید بیان کیا گیا کہ عام ٹریفک بند کردی گئی جس سے شہر کا ٹریفک نظام درہم برہم ہوگیا، کئی ایمبولینسز ٹریفک جام میں پھنس گئیں اور عوام کے ساتھ مریض بھی خوار ہوکر رہ گئے تھے،سکیورٹی  ناکوں پر شہریوں کی پولیس کے ساتھ تلخ کلامی ہوتی رہی،موجودہ حکومت کے پروٹوکول نہ لینے کے دعوے دھرے کے دھرے رہ گئے۔

پروٹوکول نہ لینے کے دعویداروں نے ایک اور یو ٹرن لے لیا،جس سے عوام میں شدید غم وغصہ پایا جارہا ہے۔