ذہن صاف کرلیں !جس دن مارشل لاءلگا چلا جاﺅں گا: چیف جسٹس


لاہور(24نیوز)نالہ میں پانی کا بہاؤدرست کرکے15دن میں رپورٹ پیش کرنے کا حکم ایڈیشنل ایڈووکیٹ جنرل امتیاز کیفی کو کرسٹلائنز فیکٹری کی رپورٹ پیش کرنے کا حکم۔

چیف جسٹس کا کہنا تھا کہ لوگوں کو ایک بھی لمحے کیلئے بیمار نہیں ہونے دیں گے۔ رپورٹس پر انحصار نہیں کریں گے۔ اپنے طور پر چیک کروائیں گے

کرسٹلائنز فیکٹری کا مالک کافی باآثر خاندان ہے۔ سپریم کورٹ لاہور رجسٹری، سرکاری ہسپتالوں کی حالت زار سے متعلق از خود نوٹس کی سماعت عدالت نے ہسپتالوں کی حالت بہتر بنانے کیلئے سفارشات پیش کرنے کیلئے ایک ہفتے کی مہلت دیدی چیف جسٹس پاکستان کی سربراہی میں دو رکنی بنچ ازخود نوٹس کی سماعت کی سرکاری ہسپتالوں کی حالت زار سے متعلق سفارشات پیش کرنے کیلئے 2 ہفتوں کی ملہت دی جائے۔

یہ بھی پڑھیں:ایون فیلڈ ریفرنس: شریف خاندان کی استثنیٰ کی درخواست مسترد ہوگئی

عدالتی معاون عائشہ حامد عدالت نے عدالتی معاون کی استدعا مسترد کرتے ہوئے انہیں ایک ہفتے کی مہلت دے دی۔از خود نوٹسز پر حل نکلنا اچھی بات ہے اور خاص طور پر ریلوے والوں کو اعتراض نہ ہو کہ انکے معاملات میں مداخلت کر رہے ہیں۔150 سال سے ریلوے کا محکمہ قائم اور یہ کہہ رہے ہیں کہ سب اچھا ہے۔ چیف جسٹس پاکستان کے پولٹری فیڈ از خود نوٹس میں ریمارکس عدالت نے مرغیوں کے ناقص گوشت اور فیڈ سے متعلق از خود نمٹا دیا۔

پڑھنا نہ بھولیں:عمران خان آج 3 روزہ دورے پر لندن روانہ ہوں گے
 
دوران سماعت عطائی ڈاکٹرز کی مداخلت پر چیف جسٹس پاکستان برہم,آپ کون ہیں۔ مفاد عامہ کے اہم کیسز کی سماعت چھوڑ کر آپکو کیوں سنوں۔الائیڈ ہیلتھ پروفیشنلز کا کہنا تھاکہ ہم الائیڈ ہیلتھ پروفیشنل ہیں۔ ہمارے ہمارے ساتھ بھی عطائیوں جیسا سلوک کیا جا رہا ہے۔اس پر چیف جسٹس  کا کہنا تھہ کہ ابھی تو کاروائی کی جا رہی ہے۔ یہ نا ہو کہ میں آپکو بند کروا دوں۔ لوگوں کی زندگیوں کے ساتھ کھیلنے والے کسی رعایت کے مستحق نہیں۔ چیف جسٹس نے کہا کہ آپ پیچھے کھڑے ہوں۔ بلکہ آپ عدالت سے باہر چلے جائیں۔

چیف جسٹس نے وزیراعلیٰ پنجاب شہبازشریف کے سابق پرنسپل سیکریٹری توقیر شاہ کی بیرون ملک تعیناتی کا نوٹس لے لیا۔سپریم کورٹ لاہور رجسٹری میں مختلف کیسز کی سماعت کے دوران چیف جسٹس نے تعیناتی کا نوٹس لیتے ہوئے توقیر شاہ کو آئندہ سماعت پر طلب کرلیا۔ چیف جسٹس نے سیکریٹری اسٹیبلشمنٹ کو آئندہ سماعت پر توقیر شاہ کی بطور ممبر ورلڈ ٹریڈ آرگنائزیشن تعیناتی کا ریکارڈ جمع کرانےکا حکم دیا ہے۔

پڑھنا نہ بھولیں:جنسی ہراسگی،عالمی مسئلہ،میشا شفیع کے بعدپاکستانی اداکاراﺅں کی لمبی لائن لگ گئی

سپریم کورٹ لاہور رجسٹری میں مقدمات کی سماعت کے بعد چیف جسٹس میاں ثاقب نثار نے ایوان اقبال میں ”یوم اقبال“کی تقریب سے خطاب کرتے ہوئے کہا ہے کہ میرے نزدیک سب سے اہم تعلیم ہے،علامہ اقبال اور قائداعظم کے نزدیک سب سے اہم جمہوریت تھی،جس دن مارشل لاءلگا چلا جاﺅں گا۔جوڈیشل مارشل لاءکی باتیں کرنیوالے اپنے ذہن صاف کرلیں،قائد اعظم کے ملک میں جمہوریت رہے گی،ووٹ کی قدر یہ ہے کہ لوگوں کی خدمت کی جائے،ہم ماورائے آئین کچھ نہیں کرنے دینگے۔

اینکرز کہتے  ہیں مار شل لا، مارشل لا، کسے لگانا ہے مارشل لاء، جس دن مارشل لاء لگا اس دن عہدے چھوڑ دیں گے، جوڈیشل مارشل لاء کا آئین میں کوئی وجود نہیں، یہ کسی کے دل کی خواہش یا اختراع ہوسکتی ہے، ہمارے ذہن میں نہیں۔ میری نظر میں سب سے اہم چیز تعلیم ہے، آج پنجاب یونیورسٹی کی 80 کنال زمین حکومت کو دینے کا نوٹس لیا ہے، اراضی گرڈ اسٹیشن کیلیے دی گئی ہے، لیکن تعلیمی ادارے کی زمین حکومت کو کیوں دی گئی؟، تعلیم سے متعلق کسی چیز پر سمجھوتا نہیں کروں گا-پنجاب اور خیبرپختون خوا کی حالت بہتر نہیں ہوئی۔