کراچی: قبضہ مافیا نے کھربوں روپے مالیت کے 8 پارکس پر قبضہ جما لیا

کراچی: قبضہ مافیا نے کھربوں روپے مالیت کے 8 پارکس پر قبضہ جما لیا


کراچی (24 نیوز) کراچی میں قبضہ مافیا نے کھربوں روپے مالیت کے آٹھ پارکس پر قبضہ جما لیا، شہر میں ہل پارک سمیت دیگر پارکس پر غیر قانونی تعمیرات اور تجاوزات قائم ہیں، جس کی الاٹمنٹ کے ڈی اے کے تحت ہونے کا انکشاف ہوا ہے۔ وزیرِ بلدیات جام خان شورو کہتے ہیں زمینوں پر قبضے کسی صورت قبول نہیں کریں گے اور شہر میں کارروائیاں جاری رہیں گی۔

تفصیلات کے مطابق قبضہ مافیا کو کے ڈٰی اے کے افسران ہی کی جانب سے اجازت ملی، محکمہ پارکس کی رپورٹ کے مطابق کے ڈی اے نے ہل پارک کی زمین پر 42 مکانات، 6 ہوٹل، دو مساجد، تھیٹر اور سوئمنگ پول کی الاٹمنٹ کی۔ پی ای سی ایچ سوسائٹی نے ہل پارک کی زمین پر 7 پلاٹوں کی غیر قانونی الاٹمنٹ کی۔

عزیز بھٹی پارک کی بات کی جائے تو کے ڈی اے الاٹمنٹ سے تقریبات کیلئے کسٹم کلب بنایا گیا، سہراب گوٹھ میں سٹی پارک اور پاک کالونی میں نیشنل پارک پر لینڈ مافیا کا قبضہ قائم ہے، نیلم کالونی اولڈ کلفٹن کے بلک پارک بھی لینڈ مافیا کا راج ہے۔ برنس گارڈن کے 40 فیصد رقبے پر محکمہ ٹوارزم کا قبضہ ہے۔ رپورٹ کے مطابق کڈنی ہل احمد علی پارک کی اراضی پر لینڈ مافیا اور واٹر بورڈ قابض ہیں۔

دوسری جانب وزیر بلدیات جام خان شورو بھی میدان میں آگئے، ایک بیان میں انہوں نے کہا کہ سپریم کورٹ کے احکامات پر ایس بی سی اے اور کے ڈی اے کے تحت شہر میں رفاعی اور فلاحی پلاٹس پر قبضوں کے خلاف کارروائی جاری رہے گی۔ سب کو معلوم ہے کہ سب سے زیادہ کس سیاسی جماعت نے رفاعی اور فلاحی پلاٹس پر قبضے اور چائنا کٹنگ کی ہے۔ ایس بی سی اے اور کے ڈی اے بلا تفریق کارروائیاں جاری رکھے اور دباو قبول نہ کرے۔