ہالی ووڈ کی خوفزدہ خواتین،جنسی ہراسگی کا ہوشربا انکشاف


لاہور(24نیوز)شوبز کی دنیا میں جہاں ایک طرف روشنیوں کی چکا چوند ہے تو دوسری طرف خوف اور ڈر کے سائے بھی اتنے ہی گہرے ہیں، امریکی جریدے کے حالیہ سروے میں بتایا گیا ہے کہ شوبز سے تعلق رکھنے والی خواتین کی ایک بہت بڑی تعداد کو جنسی ہراسانی کا مسلسل سامنا رہتا ہے۔
تفصیلات کے مطابق شوبز کی عورت بہت آزاد خیال کی جاتی ہے، مگر روشنیوں کی اس دنیا میں بھی بہت گھٹن ہیبہت خوف بھی۔ ہالی ووڈ فلمی دنیا میں خواتین کو کبھی نا کبھی جنسی ہراسانی اور حملوں کا سامنا کرنا پڑتا ہے، یو ایس اے ٹوڈے کے ایک سروے کے مطابق فلم انڈسٹری میں 94 فیصد خواتین جنسی ہراسانی کا شکار ہوتی ہیں۔
ممتاز جریدے نے 843 خواتین پر مشتمل ایک سروے کیا جس میں انہوں نے بتایا کہ فلمی دنیا کے ہر شعبے میں چاہے وہ پروڈیوسر، اداکار، رائٹر، ہدایت کار، ایڈیٹر اور دیگر عملے سے ہو انہیں کسی نہ کسی جگہ جنسی ہراسانی کا سامنا کرنا پڑتا ہے، ان میں اکثر لوگ زیادہ عمر کے ہوتے ہیں جو اپنی پاور کا غلط استعمال کرکے جنسی ہراساں کرتے ہیں۔
سروے کے مطابق 21 فیصد خواتین نے کہا کہ ان سے زبردستی زیادتی کی جاتی ہے، 75 فیصد نے دوسروں کے ساتھ زیادتی ہوتے دیکھی، 69 فیصد ذمہ داران آڈیشن کے دوران اچانک دست درازی پر اتر آتے ہیں۔ سروے میں 39 فیصد لوگ ایسے دیکھے گئے ہیں جو تصویریں دکھا کر ہراساں کرتے ہیں۔
ہالی ووڈ فلمی دنیا میں خواتین کو کبھی نا کبھی جنسی ہراسانی اور حملوں کا سامنا کرنا پڑتا ہے، یو ایس اے ٹوڈے کے ایک سروے کے مطابق فلم انڈسٹری میں 94 فیصد خواتین جنسی ہراسانی کا شکار ہوتی ہیں۔
ممتاز جریدے نے 843 خواتین پر مشتمل ایک سروے کیا جس میں انہوں نے بتایا کہ فلمی دنیا کے ہر شعبے میں چاہے وہ پروڈیوسر، اداکار، رائٹر، ہدایت کار، ایڈیٹر اور دیگر عملے سے ہو انہیں کسی نہ کسی جگہ جنسی ہراسانی کا سامنا کرنا پڑتا ہے، ان میں اکثر لوگ زیادہ عمر کے ہوتے ہیں جو اپنی پاور کا غلط استعمال کرکے جنسی ہراساں کرتے ہیں۔
سروے کے مطابق 21 فیصد خواتین نے کہا کہ ان سے زبردستی زیادتی کی جاتی ہے، 75 فیصد نے دوسروں کے ساتھ زیادتی ہوتے دیکھی، 69 فیصد ذمہ داران آڈیشن کے دوران اچانک دست درازی پر اتر آتے ہیں،سروے میں 39 فیصد لوگ ایسے دیکھے گئے ہیں جو تصویریں دکھا کر ہراساں کرتے ہیں۔