آئین کی دستاویز عوام کے منتخب نمائندوں کی پارلیمنٹ بناتی ہے: نواز شریف


لاہور(24نیوز)سابق وزیراعظم نوازشریف نے کہا ہے کہ آئین بلاشبہ ریاست کانظام چلانے کیلئے سب سے مقدس دستاویزہے، لیکن یہ دستاویزعوام کے منتخب نمائندوں پرمشتمل پارلیمنٹ بناتی ہے،جج صاحبان کاآئین کومقدس اور بالاتردستاویزقراردیناخوش آئند ہے۔
سابق وزیراعظم کا کہناتھا کہ آئین کوپارلیمنٹ کی تخلیق سمجھاجاتاہے،پارلیمنٹ اس کے ذریعے دیگراداروں اوراپنی حدودکاتعین کرتی ہے۔انہوں نے کہا کہ پارلیمنٹ کوعدلیہ اورانتظامیہ کے ساتھ ایک ریاستی ستون کہاجاتاہے۔

نوازشریف کا کہناتھا کہ پارلیمنٹ کودنیابھرمیں تمام اداروں کی ماں بھی سمجھاجاتاہے۔آئین بلاشبہ ریاست کانظام چلانے کیلئے سب سے مقدس دستاویزہے، لیکن یہ دستاویزعوام کے منتخب نمائندوں پرمشتمل پارلیمنٹ ہی بناتی ہے۔

انھوں نے کہاکہ پارلیمنٹ کابنایا گیا قانون من مانی تعبیر سےختم کرنا خطرناک ہوگا، پارلیمنٹ کےکسی قانون کی تشریح کی ضرورت ہے تو ابہام دور کرنے پارلیمنٹ بھیجنا چاہیے،  پارلیمنٹ کے قانون بھی عدالتی توثیق کے محتاج ہوجائیں تویہ کون سا آئین ہے۔

سابق وزیراعظم کا کہنا تھا کہ آئین ریاست کا نظام چلانے والی سب سے مقدس دستاویز ہے، آئین کی دستاویز عوام کے منتخب نمائندوں کی پارلیمنٹ ہی بناتی ہے، پارلیمنٹ آئین کے ذریعے دیگر اداروں اور اپنی حدود کا بھی تعین کرتی ہے۔

میاں نوازشریف نے کہا کہ اداروں کا احترام ان اداروں کی کارکردگی اور احترام سے ہوتاہے، پارلیمنٹ کو دنیا بھر میں اداروں کی ماں بھی سمجھاجاتاہے،  جج صاحبان کا آئین کو مقدس اور بالا تر دستاویز قرار دینا خوش آئند ہے۔

مزید ان کا کہنا تھا کہ  32برسوں تک آمروں نے دستور کو ردی کی ٹوکری میں ڈالے رکھا، آمروں کے ہاتھ پر بیعت کرنے والے سب کچھ دیکھتے رہے، آج تک آئین کو کوئی زخم پارلیمنٹ نے نہیں لگایا، سارے زخم صرف عدلیہ کےکچھ جج صاحبان کی مدد سےآمروں نےلگائے۔
 

اظہر تھراج

صحافی اور کالم نگار ہیں،مختلف اخبارات ،ٹی وی چینلز میں کام کا وسیع تجربہ رکھتے ہیں