حمزہ شہباز کے بوٹ پالش نہیں کر سکتا : زعیم قادری


لاہور ( 24نیوز ) پاکستان مسلم لیگ ن کے رہنما زعیم قادری نے کہا ہے کہ حمزہ شہباز کے بوٹ پالش نہیں کر سکتا۔ لاہور تمھاری اور تمھارے باپ کی جاگیر نہیں ہے۔

صوبائی دارالحکومت میں نیوز کانفرنس میں صحافیوں کے سوالوں کے جوابات دیتے ہوئے ان کا کہنا تھا کہ ادنیٰ کارکن کی حیثیت سے عملی سیاست کا آغاز کیا۔ میرے خون میں مسلم لیگ تھی ہے اور رہے گی۔ 8 برس نوازشریف کا ترجمان رہا۔

’’ حمزہ شہباز ! لاہور تمھاری اور  تمھارے باپ کی جاگیرنہیں‘‘ 

زعیم قادری نے کہا  کہ 2002 کے الیکشن میں کلثوم نواز اور نواز شریف کا کورنگ امیدوار تھا۔ میری جگہ کچھ اورلوگوں کوآگے کردیا گیا۔ اس کےخلاف ایک لفظ نہیں بولا۔مجھے فخر ہے 5 سال پابند سلاسل رہا اور مسلم لیگ ن پنجاب کا سیکرٹری جنرل بھی رہا۔

ان کا مزید کہنا تھا  کہ  حمزہ شہباز کے بوٹ پالش نہیں کرسکتا، حمزہ شہباز اور اس کے باپ کی جاگیرنہیں، سیاست کرکے دکھاؤں گا، میں مالشیا نہیں ہوں۔ تم اپنے بوٹ پالیشیوں کو لاؤ الیکشن لڑو میرا الیکشن تمہارے ساتھ ہے۔ٹکٹ میرا مسئلہ نہیں،میرا مسئلہ کچھ اورہے،میں نظریاتی کارکن ہوں۔

آزاد حیثیت میں این اے 133 سےالیکشن لڑنے کا اعلان

لیگی رہنما نے قومی اسمبلی کے حلقہ این اے 133 سے آزاد حیثیت میں الیکشن لڑنے کا اعلان کرتے ہوئے کہا کہ حمزہ شہباز کے بوٹ پالش نہیں کر سکتا، نوکری صرف اپنے کارکنوں کی کروں گا۔ ان کا حمزہ شہباز کو کہنا تھا کہ تم اپنے بوٹ پالیشیوں کو لاؤ اور الیکشن لڑو، میرا مقابلہ تمہارے ساتھ ہے، میں پنجاب اور پاکستان کے ورکرز کے ساتھ کھڑا ہوں گا۔

5 سال قید رہا، 8 برس نوازشریف کا ترجمان رہا

ان کا کہنا تھا 2002 میں نواز شریف اور کلثوم نواز کا کورنگ امیدوار تھا، میری جگہ کچھ اور لوگوں کو آگے کر دیا گیا لیکن ایک لفظ نہیں کہا، اس بار بھی میری جگہ کسی اور امیدوار کو آگے کر دیا گیا۔ 

زعیم قادری اس وقت ناراض ہو گئے جب ان کو وعدہ کے باوجود ٹکٹ نہیں دیا گیا۔ جس پر زعیم قادر بپھر گئے اور اعلان بغاوت کر دیا۔ اپنی بات کو حتمی شکل دینے کے لیے انھوں نے پریس کانفرنس کا اعلان کیا جس پر لیگی رہنماؤں نے ان کو منانے کی کوششیں بھی کیں۔پہلی خواجہ سعد رفیق تو بعد میں رانا مشہور ان کو منانے پہنچے۔

شازیہ بشیر

   Shazia Bashir   Edito