ایسا گاﺅں جہاں بچے پیدا کرنا جرم ہے

ایسا گاﺅں جہاں بچے پیدا کرنا جرم ہے


مافی ڈور(24نیوز)ہر شادی شدہ جوڑے کی خواہش ہوتی ہے کہ اس کے بچے ہوں جو ان کا سہارا بنیں،مختلف ممالک میں تو آباد ی بڑھانے کیلئے لوگوں کو زیادہ بچے پیدا کرنے کیلئے مراعات بھی دی جاتی ہیں لیکن دنیا میں ایک ایسا گائوں بھی ہے جہاں بچے پیدا کرنے کی اجازت نہیں ہے۔

گھانا کے گاؤں مافی ڈوو میں توہم پرستی بچوں کی پیدائش کی اجازت نہیں دیتی۔ نہ ہی وہاں مردوں کو دفنانے اور مویشی پالنے کی اجازت ہے۔لیکن یہ تہمات کہاں سے آئی ہیں اور کیا کوئی انھیں چیلینج کر رہا ہے؟

ایک خاتون حینا کوسین نے بتایا کہ میں حمل کے نویں ماہ میں ہوں لیکن مجھے اپنے گائوں میں بچے کو جنم دینے کی اجازت نہیں ہے،اس گائوں میں جتنے بھی افراد رہتے ہیں وہ اس گائوں میں پیدا نہیں ہوئے،یہاں کے لوگوں کا خیال ہے کہ یہاں پیدائش ممنوع ہے اور ایسا کرنے والے دیوتائوں کو ناراض کرتے ہیں۔

گائوں کے بزرگ وامے سندیسی نے بتایا کہ جب ہمارے آبائو اجداد اس گائوں میں آرہے تھے تو ان کو آسمان سے آواز آئی کہ یہ مقدس سرزمین ہے یہاں رہنا ہے تو قواعد پر عمل کرنا ہوگا،قواعد یہ ہیں کہ یہاں کسی کو جنم نہیں دینا چاہیے۔کوئی بھی جانور رکھے گا اور نہ ہی کسی کو دفن کیا جائے گا۔

زچگی کے دوران یہاں خواتین کو قریبی گائوں میں جانا پڑتا ہے جس کی انہیں بہت تکلیف اٹھانا پڑتی ہے،خطے کے دیگر لوگ ایسے قوانین کو ختم کرچکے لیکن مافی ڈور والے ایسا کرنے کو تیار نیہں ہیں۔

اظہر تھراج

Senior Content Writer