مسلم لیگ ن نے اپنے دور اقتدار میں ملکی معیشت کی دھجیاں اڑادیں


اسلام  آباد (24نیوز) مسلم لیگ نواز کی حکومت پاکستان کو ایشین ٹائیگر بنانے کا وعدہ پورا نہ کرسکی ، پانچ سال میں ملکی برآمدات کو 40 ارب ڈالرز تک پہنچانے کا وعدہ پورا نہ ہوسکا , برآمدات بڑھنے کی بجائے مسلسل کم ہوتی گئیں، صنعتکاروں اور سرمایہ کاروں نے برآمدات میں کمی کی وجہ حکومت کی ناقص مالیاتی پالیسیاں ہیں.

 2013 کے انتخابی منشور میں مسلم لیگ نواز نے ملکی برآمدات کو 25 ارب ڈالرز سے بڑھا کر 40 ارب ڈالرز تک پہنچانے کا وعدہ کیا ، مگر پانچ سالہ دور میں حکومت اپنے اس وعدے کو پورا نہ کرسکی ، پانچ سال میں ملکی برآمدات میں کمی کا سلسلہ جاری رہا، 2013 میں برآمدات 25 ارب 12 کروڑ ڈالرز تھیں ، 2014 میں 24 ارب 71 کروڑ ڈالرز، 2015 میں 22 ارب ڈالرز اور 2016 میں 20 ارب ڈالرز تک جا پہنچیں جب کہ 2017 میں برآمدات کا حجم 21 ارب 57 کروڑ ڈالرز رہا۔ رواں سال ملکی برآمدات 22 ارب ڈالرز کے لگ بھگ رہنے کی توقع ہے۔ 

پڑھنا مت بھولیں: مسلم لیگ ن نے اپنے دور اقتدار میں ملکی معیشت کی دھجیاں اڑادیں

صنعتکاروں کا کہنا ہے کہ صنعتوں کیلئے بجلی اور گیس مہنگی کردی گئی، اربوں روپے کے ٹیکس ری فنڈز بھی نہیں دئیے گئے۔حکومتی وزیر اس بات کا اعتراف کرتے ہیں کہ برآمدات کو نظر انداز کیا گیا .
سرمایہ کاروں کا کہنا ہے کہ پاکستان میں پیداواری لاگت میں اضافے اور ناقص حکومتی پالیسیوں کی وجہ سے ملکی برآمدات میں کمی ہوئی.

وقار نیازی

سٹاف ممبر، یونیورسٹی آف لاہور سے جرنلزم میں گریجوایٹ، صحافی اور لکھاری ہیں۔۔۔۔