سات گواہوں نےمیشا شفیع کےتمام الزامات کوغلط قرار دے دیا

سات گواہوں نےمیشا شفیع کےتمام الزامات کوغلط قرار دے دیا


لاہور ( 24نیوز ) سیشن کورٹ میں گلوکارعلی ظفر کےسات گواہوں نےگلوکارہ میشا شفیع کےتمام الزامات کوغلط قرار دے دیا،عدالت نے آئندہ سماعت پرمیشا شفیع کےوکیل کوگواہوں کےبیان حلفی پرجرح کے لیے طلب کرلیا۔

ایڈیشنل سیشن جج امجدعلی نےگلوکارعلی ظفرکے ہتک عزت کےدعوی پر سماعت کی،دوران سماعت علی ظفر کےوکلاء نےعدالتی حکم کےمطابق سات گواہوں کے بیان حلفی جمع کرائے،گواہوں نےمیشا شفیع کے الزامات کو مسترد کرتے ہوئے کہا کہ اسٹوڈیومیں ریہرسل کےدوران ہراساں کرنےکا کوئی واقعہ پیش نہیں آیا،ریہرسیل کےدوران اسٹوڈیو میں گیارہ افراد موجود تھے-

گواہان نےاپنےبیان حلفی میں کہا کہ میشا شفیع اسٹوڈیو میں داخل ہوئیں توعلی ظفرکوگلےسےلگا کرسلام کیا،ریہرسل کےاختتام پر بھی میشا شفیع نےاسی انداز میں علی ظفرکوخداحافظ کہا،اس دوران کوئی ناخوشگوار واقعہ پیش نہیں آیا۔

ضرور پڑھیں:انکشاف، 24 اگست2019

گواہوں کا کہنا تھا کہ میشا شفیع نےعلی ظفر پرجھوٹا الزام عائد کیا ہے جس کا حقیقت سے کوئی تعلق نہیں،عدالت نےعلی ظفر کےساتوں گواہان کے بیان حلفی کوریکارڈ کا حصہ بناتےہوئےآئندہ سماعت پرمیشا شفیع کےوکلاء کو گواہوں کے بیانات پر جرح کے لیے طلب کرلیا۔

عدالت نے کیس کی مزید سماعت 29 مئی تک ملتوی کردی، علی ظفر نےمیشا شفیع کے خلاف سو کروڑ روپے ہرجانے کا دعوی دائر کررکھا ہے۔

اظہر تھراج

Senior Content Writer