پسند کی شادی کرنا جرم بن گیا، گھوٹکی میں پنچائت کا انوکھا فیصلہ

پسند کی شادی کرنا جرم بن گیا، گھوٹکی میں پنچائت کا انوکھا فیصلہ


گھوٹکی(24 نیوز): پسند کی شادی کرنا جرم بن گیا۔ گھوٹکی کے علاقے ڈھرکی کی راجہ کالونی میں تین ماہ قبل پسند کی شادی کرنے والے جوڑے کو پنچائت نے الگ کر دیا، متاثرہ خاندان جرگے کے فیصلے کیخلاف سراپا احتجاج ہے۔

تفصیلات کے مطابق تین ماہ قبل کوٹ مٹھن کی عدالت میں پسند کی شادی کرنے والے جوڑے کو گھوٹکی کی پنچائت نے ایک دوسرے سے الگ کر دیا۔ پنجائت نے نوجوان کو زندہ رہنے کے لئے70 لاکھ روپے ادا  کرنے کے ساتھ شہر بدر ہونے کا حکم دے دیا۔پنچائت نے رقم کی عدم ادائیگی پر چالیس مویشی اور گھر کا قیمتی سامان ضبط کر لیا۔ جس پر نوجوان عاشق کے ورثا پنچائت کے غیر قانونی فیصلے کیخلاف سراپا احتجاج ہیں۔

ورثاء کا کہنا ہے کہ گھوٹکی میں جرگہ وڈیرے مولا بخش اور پریل خان رہڑ نے کیا،  جرگے کی اطلاح پولیس کو دی تو لڑکے کو سیاہ کاری کے الزام میں قتل کر دینے کی دھکمی دی گئی۔