مقبوضہ کشمیر میں نسل کشی کا بڑا منصوبہ بے نقاب،عالمی تنظیم نے الرٹ جاری کردیا



اسلام آباد(24 نیوز)حقوق کی عالمی تنظیم جینوسائیڈ واچ نے مقبوضہ کشمیر میں نسل کشی کے خطرے کا الرٹ جاری کردیا،عالمی تنظیم نے اقوام متحدہ سے بھارت کو مقبوضہ کشمیر میں نسل کشی سے روکنے کا مطالبہ کرتے ہوئے کہا کہ وادی میں کئی لاکھ بھارتی فوجی تعینات ہیں اور مسلمان اکثریت پر اقلیت ہندو فوج کی حکمرانی ہے۔ مقبوضہ کشمیر میں بڑے پیمانے پر قتل عام شروع ہوسکتا ہے۔

جینوسائڈ واچ نے مقبوضہ کشمیر کے حوالے سے الرٹ جاری کرتے ہوئے کہا کہ مقبوضہ وادی میں کشمیریوں کی نسل کشی کا سلسلہ جاری ہے، اقوام متحدہ اور دنیا بھر کے ممالک بھارت کو کشمیریوں کی نسل کشی روکنے کی وارننگ دیں، مقبوضہ کشمیر میں انسانی حقوق کی خلاف ورزیاں، تشدد اور جبری قید کا سلسلہ جاری ہے، مسلمان رہنماؤں کو جلا وطن کرنے کی کوشش کی جارہی ہے جبکہ مواصلاتی نظام بھی معطل ہے۔

14ملین کشمیری واد ی میں محصور،خوراک،ادویات کی قلت پیدا ہوچکی:ترجمان دفتر خارجہ

ادھر دفتر خارجہ میں ترجمان ڈاکٹر محمد فیصل نے  ہفتہ وار میڈیا بریفنگ دیتے ہوئے کہا ہے کہ وزیر خارجہ نے اپنے مختلف ممالک کے ہم منصبوں سے رابطے کیے  ہیں۔شاہ محمود قریشی نے انہیں مقبوضہ کشمیر کی صورتحال پر اعتماد میں لیا ،عالمی راہنماؤں سے بھارتی مظالم بند کرانے کا کہا گیا ،مقبوضہ جموں و کشمیر پر پاکستان کا موقف اصولی ہے جس میں کوئی تبدیلی نہیں آئی، پاکستان مسئلہ کشمیر کا اقوام متحدہ کی قراردادوں کی روشنی میں کشمیریوں کی خواہشات کے مطابق حل کرنے کا حامی ہے۔

انہوں نے کہا کہ افغانستان میں دہشت گردی کے واقعات کی مذمت کرتے ہیں ،افغانستان میں دھماکوں میں ملوث دہشت گرد کے پاکستانی ہونے کے دعوے کو مسترد کرتے ہیں، وزیر اعظم نے امریکی صدر ٹرمپ کو ٹیلی فون کیا اور مقبوضہ کشمیر کی صورتحال اور علاقائی تبدیلیوں پر تفصیلی تبادلہ خیال کیا ۔ہمارے پاس داعش کی موجودگی کے حوالے سے کوئی تفصیلات نہیں ہیں، پورے یورپ اور امریکہ میں موجود کشمیری احتجاج کر رہے ہیں جب تک نتائج نہیں آتے تب تک کشمیریوں کا احتجاج جاری رہے گا۔

انہوں نے کہا کہ 14 ملین مسلمانوں کو گھروں میں محصور کیا گیا ہے۔ نو لاکھ سے زائد بھارتی افواج کشمیر میں مظالم میں مصروف ہیں کشمیر میں ادویات اور خوراک کی شدید قلت پیدا ہو چکی ہے ہم عالمی برادری سے مقبوضہ کشمیر کی صورتحال کا نوٹس لینے کی اپیل کرتے ہیں بھارت کی جانب سے ایل او سی اور ورکنگ باؤنڈری کی خلاف ورزیوں پر بھارتی ڈپٹی ہائی کمشنر کو 13, 15, 18 اور 20 اگست کو طلب کیا گیا۔ ایک ہفتے میں 4 کشمیری شہید جبکہ سینکڑوں زخمی ہو چکے ہیں مقبوضہ کشمیر میں آج کرفیو کو 19 دن ہو گئے ہیں 14 ملین کشمیریوں کو گھروں میں محصور کیا ہوا ہے مقبوضہ کشمیر میں تاحال انٹرینٹ اور موبائل سروس بند ہے۔

سوشل میڈیا پر وائرل کارٹون

اظہر تھراج

Senior Content Writer