بھارت نے حملے کی غلطی کی تو اس بار جواب مختلف ہوگا :ترجمان پاک فوج



راولپنڈی(24نیوز)ترجمان پاک فوج میجر جنرل آصف غفور نے کہا ہے کہ بھارت نے آج تک پاکستان کو تسلیم نہیں کیا ،بھارت نے حملے کی غلطی کی تو اس بار جواب مختلف ہوگا،آخری گولی اور آخری سانس تک اپنے ملک کا دفاع کرینگے،جنگ شروع آپ کرینگے تو ختم ہم کرینگے،آپ ہمیں حیران نہیں کرسکتے ہم آپ کو حیران کردینگے۔

ڈی جی آئی ایس پی آر میجر جنرل آصف غفور نے  پریس کانفرنس میں کہا ہے کہ بھارت نے آج تک پاکستان کو تسلیم نہیں کیا ہے،بھارت نے ہمیشہ پاکستان کیخلاف سازشیں کی ہیں،بھارت نے دہشتگردی کو ہوا دی،مشرقی پاکستان میں مکتی باہنی کے نام پر بھارتی وزیر اعظم کا اعتراف واضح ثبوت ہے۔

 ترجمان پاک فوج نے کہا کہ پاکستان کے آزاد ہونے کی حقیقت بھارت آج تک تسلیم نہیں کرسکا، 1947 میں بھارت نے کشمیر پر حملہ کیا اور 72 سال سے اُن کا کشمیر میں ظلم و ستم جاری ہے۔ 1965 میں ایل او سی کی کشیدگی کو بھارت انٹرنیشنل بارڈر پر لے آیا، اس وقت ہمارا ملک ترقی کی راہ پر گامزن تھا اس جنگ کے اس پر اثرات ملک پر پڑے، 1971 میں سازش سے ہمیں دولخت کیا گیا، بھارت نے مکتی باہنی کے ذریعے مشرقی پاکستان میں حالات خراب کرائے ہم اس سانحے سے بھی سنبھل گئے۔

انہوں نے کہا کہ 1981 سے 84 کا ایسا وقت تھا جس میں ہماری مشرقی سرحد پر کوئی واقعہ نہیں ہوا، ہم نے دوبارہ استحکام کی طرف جانا شروع کیا لیکن پر سیاچن ہوا، ایسا علاقہ جہاں پاک فوج کی موجودگی نہیں تھی وہاں آے ہمارے علاقے پر قبضہ کیا اس وقت سے آج تک دنیا کے بلند ترین محاذ پر ہماری فوج ڈٹی ہوئی ہے۔

انہوں نے کہا ہے کہ پلوامہ حملے کا وقت بہت اہمیت رکھتا ہے،جب بھی پاکستان میں اہم پراگریس ہوتی ہے بھارت گڑ بڑ کرنے کی کوشش کرتا ہے،اب بھی بھارت میں انتخابات ہورہے ہیں ،ممبءی حملوں کے وقت بھی وہاں الیکشن ہورہے ہیں۔14فروری کو پلوامہ میں کشمیری نوجوان نے قابض فورسز کو نشانہ بنایا جس کے بعد بھارت کی طرف سے پاکستان پر الزامات کی بارش ہوگئی، بغیر سوچے اور تحقیق کے الزامات لگائے گئے۔

انہوں نے کہا ہے کہ سنا ہے بھارت جنگ کی تیاریاں کررہا ہے،اگر ایسا ہوا تو ہم بھی اپنا دفاع کرنا جانتے ہیں،اس بار جواب مختلف ہوگا، پاک فوج ایک جوان سے لے کر بڑوں تک سبھی نے اپنے قدموں پر کھڑے ہوکر دہشتگردی کے خلاف جنگ لڑی ہے،پاکستان بدل رہا ہے ،ہم خطے میں امن کوشش کررہے ہیں۔

انہوں نے کہا کہ بھارتی میڈیا جنگ پر چل رہا اور پاکستان کا میڈیا ذمہ دارانہ رپورٹنگ کررہا ہے ہم اسے خراج تحسین پیش کرتے ہیں۔انہوں نے بھارت کو مخاطب کرتے ہوءے کہا ہے کہ پاکستان اور بھارت جمہوری ملک ہیں،دو جمہوری ملکوں میں جنگ نہیں ہوتی ،اپنی نسلوں کی فکر کریں۔ایک سوال کے جواب میں انہوں نے کہا کہ پاکستان جنگ کی تیاری نہیں کررہا لیکن ہم دفاع کے لیے تیار ہیں،ایسے دفاع جو ضروری ہوتا ہے۔آخری سانس اور آخری گولی تک ملک کا دفاع کریں گے۔

ایران اور بھارت کے ساتھ تعلقات کی نوعیت مختلف ہے:میجر جنرل آصف غفور

ایک اور سوال کے جواب میں انہوں نے کہا کہ ایران اسلامی ملک ہے ان کے ساتھ اچھی کو آرڈینیشن ہے،ایران الگ ملک ہے اس کے ساتھ تعلقات کی اپنی نوعیت ہے۔وزیر اعظم پاکستان نے پہلی بار کھلے ذہن کے ساتھ بھارت کو دہشتگری پر بات کرنے کی دعوت دی ہے۔

انہوں نے سوالات کے جواب میں کہا ہے کہ کلبھوشن کے معاملے پر ہم عالمی عدالت میں نہ جانا چاہتے تو ہم ایسا کرسکتے تھے لیکن ہم نے ذمہ دار ملک کی طرح مظاہرہ کیا،دنیا پاکستان کے رول کو تسلیم کررہی ہے،دنیا پاکستان کی امن کوششوں کو مان رہی ہے،پلوامہ معاملے پر چین،سعودی عرب نے اچھے دوستوں کی طرح ساتھ دیا۔

اظہر تھراج

Senior Content Writer