سانحہ ساہیوال: وزارت داخلہ پر کون دباؤ ڈال رہا ہے؟اہم انکشاف



لاہور ( 24نیوز ) سانحہ ساہیوال میں ملوث پیٹی بھائیوں کو بچانے کیلئے اعلیٰ پولیس افسر سر گرم ہوگئے،معاملہ دبانے کیلئے وزارت داخلہ پر دباؤ ڈالنے لگے۔

ذرائع کے مطابق پولیس افسروں کا وزارت داخلہ پر دباؤ ڈالتے ہوئے کہنا تھا کہ اگر دس درست واقعات میں سے ایک غلط بھی ہوگیا تو ساری کارکردگی کو نہیں لپیٹا جاسکتا،سی ٹی ڈی کی اچھی کارکردگی کو بھی مدنظر رکھنا چاہئے۔

مقتول خلیل کے بھائی جلیل کا کہنا ہے کہ حکومت ملزموں کو بچارہی ہے،ہمیں دھمکیاں دی جارہی ہیں پولیس تحفظ بھی نہیں دے رہی،مقتول ذیشان کے بھائی کا کہنا تھا کہ میرا بھائی کمپیوٹر کے پارٹس کا کام کرتا تھا۔

جے آئی ٹی سربراہ کی آج شام تک حتمی رپورٹ دینے سے معذرت

ادھر جے آئی ٹی کے سربراہ اعجاز شاہ نے کہا ہے کہ واقعے میں ملوث پانچ اہلکاروں کا تعلق ساہیوال سے تھا،ابھی تک کسی نتیجہ پر نہیں پہنچ سکے ہیں۔جے آئی ٹی سربراہ نے آج رپورٹ دینے سے معذرت کرلی ہے۔

ماں نے بچوں کو بچایا

عینی شاہدین کہتے ہیں کہ متاثرہ گاڑی سے کوئی مزاحمت نہیں کی گئی،ماں نے بچوں کو بچایا،وہ بچوں کے اوپر لیٹ گئی،ماں کی آغوش میں ہونے کی وجہ سے بچے صرف زخمی ہوئے۔

یاد رہے قومی شاہراہ پر ساہیوال کے قریب پنجاب پولیس کی انسداد دہشت گردی فورس (سی ٹی ڈی) نے مبینہ مقابلے میں دو خواتین سمیت چار افراد کو موت کی گھاٹ اتار دیا تھا۔

اظہر تھراج

Senior Content Writer