سانحہ ساہیوال پر جے آئی ٹی کی پہلی ناکامی سامنے آگئی


لاہور ( 24نیوز ) سانحہ ساہیوال میں ملوث پیٹی بھائیوں کو بچانے کیلئے اعلیٰ پولیس افسر سر گرم تو تھے ہی اب جے آئی ٹی کی پہلی ناکامی سامنے آگئی۔

سانحہ ساہیوال پر بنائی گئی جے آئی ٹی کے سربراہ اعجاز شاہ نے کہا ہے کہ واقعے میں ملوث پانچ اہلکاروں کا تعلق ساہیوال سے تھا،ابھی تک کسی نتیجہ پر نہیں پہنچ سکے ہیں،آج رپورٹ نہیں پیش کرسکتے۔

انہوں نے کہا ہے کہ ابھی تک بتانے کیلئے کچھ نہیں ہے،اتنے بڑے واقعے کی انکوائری تین دن میں ممکن نہیں،سارے شواہد اور تحقیق کے بعد بھی کسی نتیجے پر پہنچیں گے،ابھی تک ہم نے چار افراد کے بیان ریکارڈ کیے ہیں،دہشتگردی کا معاملہ ہے تیس دن تو لگتے ہیں،سی ٹی ڈی کے 6اہلکار تھے جو حراست میں لئے گئے ہیں۔

ادھر تجزیہ کاروں کا کہنا ہے کہ عینی شاہدین ،زندہ بچ جانے والے عمیر کے بیانات کہاں ہیں،حامد میر نے کہا ہے کہ اگر رپورٹ نہیں آئے گی تو ہم سوال اٹھاتے رہیں گے،ان کا صرف ایک ہی مقصد ہے کسی طریقے سی ٹی ڈی اہلکاروں کو بچایا جائے۔

کیا کہتے ہیں حامد میر؟ویڈیو دیکھیں

یاد رہے قومی شاہراہ پر ساہیوال کے قریب پنجاب پولیس کی انسداد دہشت گردی فورس (سی ٹی ڈی) نے مبینہ مقابلے میں دو خواتین سمیت چار افراد کو موت کی گھاٹ اتار دیا تھا۔