برساتی نالہ میں بہنے والے بچوں کا سراغ نہ لگایا جاسکا

برساتی نالہ میں بہنے والے بچوں کا سراغ نہ لگایا جاسکا


راولپنڈی(24نیوز)  عید سے ایک روز قبل برساتی نالے میں بہنے والے ایک ہی گھر کے 3 بچوں کا ابھی تک پتہ نہیں چل سکا، مائیں اپنے بچوں کی یاد میں دن رات تڑپ رہی ہیں،والدین نے پاک بحریہ سے ریسکیو آپریشن میں حصہ لینے کی اپیل کردی۔

آنکھوں میں آنسو، لبوں پر فریاد، ہاتھوں میں تسبیبح اور گود میں قرآن پاک  یہ ہیں شناور صہیاب اور فرحان کے اہل خانہ جو 6 روز سے اپنے بچوں کی راہ تک رہے ہیں تینوں بچے عید سے ایک روز پہلے نالہ لئی کے برساتی پانی میں بہے گئے تھے، ریسکیو ٹیموں کی جانب سے تلاش کے باوجود بچوں کا پتا نہ چل سکا۔

یہ بھی پڑھیں: کیلاش قبیلہ کی خواتین کو ہراساں کرنیوالا شخص ایمل دو سال بعد گرفتار

بچوں کے والدین بے بسی کی تصویر بن گئے ہیں اور وہ بچوں کی واپسی کی دعائیں اور التجائیں کر رہے ہیں ۔ بچوں کے اہلخانہ نے ضلعی انتظامیہ کو ذمہ دار ٹھراتے ہوئے چیف جسٹس پاکستان سے معاملے کا نوٹس لینےکا مطالبہ کیا ہے۔

شہریوں کا کہنا ہے کہ نالوں کی صفائی نہ ہونے اور غیر قانونی تعمیرات کے باعث نالے موت کا سامان بن گئے اورہرسال افسوسناک واقعات رونما ہوتے ہیں۔

سٹاف ممبر، یونیورسٹی آف لاہور سے جرنلزم میں گریجوایٹ، صحافی اور لکھاری ہیں۔۔۔۔