ن لیگ نے اقتدار کے آخری دنوں میں نئے نوٹ چھاپنےاور قرضے لینے کی رفتار بڑھا دی

ن لیگ نے اقتدار کے آخری دنوں میں نئے نوٹ چھاپنےاور قرضے لینے کی رفتار بڑھا دی


کراچی ( 24نیوز ) اقتدار کے آخری دنوں میں حکومت کی طرف سے نوٹ چھاپنے اور نئے قرض لینے کی رفتار تیز ہو گئی، ایک ہفتے میں 102 ارب روپے کے نئے نوٹ جاری کیے گئے، مرکزی بینک سے 73 ارب روپے کا نیا قرضہ لیا۔

اسٹیٹ بینک کے مطابق مئی کے دوسرے ہفتے کے دوسرے ہفتے کے دوران حکومت نے 101 ارب 78 کروڑ روپے مالیت کے نئے نوٹ جاری کیے۔ جس سے مارکیٹ میں زیر گردش نوٹوں کا مجموعی حجم 101 ارب 84 کروڑ روپے کے اضافے سے 45 کھرب 86 ارب 47 کروڑ 71 لاکھ روپے کی نئی بلند ترین سطح پر پہنچ گیا۔

یہ بھی پڑھیں:پاکستان میں سیاسی عدم استحکام سےمعیشت کوبڑاجھٹکا لگےگا، موڈیز کی وارننگ

  جبکہ اسی عرصے میں اخراجات پورے کرنے کے لیے وفاقی حکومت نے مرکزی بینک سے 7 کھرب 27 ارب 66 کروڑ روپے کے نئے قرضے بھی لیے۔ رواں مالی سال کے دوران حکومت اب تک مرکزی بینک سے 20 کھرب 14 ارب 57 کروڑ روپے قرض لے چکی ہے، یہ بھی ایک نیا رکارڈ ہے۔ مئی کے پہلے ہفتے کے دوران بھی حکومت کی طرف سے 69 ارب 38 کروڑ روپے کے نئے نوٹ چھاپے گئے تھے.

پڑھنا نہ بھولیں:دبئی میں کاروبار کرنیوالے تاجروں ،کمپنیوں کیلئے بڑی خوشخبری

  ماہرین کے مطابق زیر گردش نوٹوں کی مالیت میں رکارڈ اضافے اور بینکوں سے رکارڈ مالیت میں قرضوں کے باعث آنے والی حکومت کو ابتدا سے ہی معاشی مشکلات کا سامنا کرنا پڑے گا۔