پی ٹی آئی کور گروپ کا اجلاس، شاہ محمود قریشی اور جہانگیر ترین آمنے سامنے آ گئے

پی ٹی آئی کور گروپ کا اجلاس، شاہ محمود قریشی اور جہانگیر ترین آمنے سامنے آ گئے


 اسلام آباد(24نیوز) پاکستان تحریک انصاف کے سینئر رہنما شاہ محمود قریشی اور جہانگیر خان ترین  کور گروپ کے اجلاس میں آمنے سامنے آگئے۔تلخ جملوں کا تبادلہ، ایک دوسرے پر الزامات کی بوچھاڑ کر دی۔

تفصیلات کے مطابق پاکستان تحریک انصاف کے سینئر رہنما شاہ محمود قریشی اور جہانگیر خان ترین ایک دوسرے کے آمنے سامنے اس وقت آگئے جب پارٹی کے کور گروپ کا اجلاس ہو رہا تھا۔دونوں کے درمیان سخت الفاظ کا تبادلہ ہوا، دونوں رہنماؤں میں بحث کی وجہ رائے حسن نواز تھے۔

یہ بھی پڑھیں: پی ٹی آئی رہنما نعیم الحق نے لیگی رہنما دانیال عزیز کو تھپڑ رسید کر دیا 

شاہ محمود قریشی کا کہنا تھا کہ الیکشن کمیشن کے فیصلہ کے بعد رائے حسن نواز کی پارٹی میں اہلیت کو انھوں نے چیلنج کیا۔ رائے حسن نواز نااہلی کے بعد پارٹی کاعہدہ اور اجلاسوں میں شرکت کے مجاز نہیں۔

شاہ محمود قریشی کے اعتراض پر جہانگیر خان ترین بول پڑے اور کہا کہ شاہ صاحب آپ کا اشارہ میری طرف ہے۔ انھوں نے مزید یہ بھی کہا کہ آپ کو سندھ کا صوبہ دیا گیا تھا لیکن آپ نے پارٹی کا نام ڈبو کر رکھ دیا۔ انھوں نے یہ بھی نکتہ اٹھا یا کہ شاہ محمود قریشی کسی پارٹی رہنما کو منہ نہیں لگاتے۔

پڑھنا نہ بھولیں: مراد علی شاہ نے سندھ میں الگ صوبے کی بات کرنے والوں پر لعنت بھیج دی 

دونوں رہنماوں کے درمیان تلخ جملوں پر عمران خان نے مداخلت کی۔ عمران خان نے رائے حسن نواز کو پارلیمانی بورڈ سے ہٹانے اور کسی بھی عہدہ پر نہ رکھنے کااعلان کیا، عمران خان کے اعلان کے بعد معاملا رفع دفع ہوگیا۔

پی ٹی آئی نے اس معاملہ کو اچھالنے والوں کی مذمت کی ہے اور اس کو افسوسناک قرار دیا ہے۔ جبکہ پیپلز پارٹی نے کہا ہے کہ شاہ محمود قریشی سیاسی خانہ بدوش ہیں جو اب نئے سیاسی سفر کے لیے رخت باندھ رہے ہیں۔