قومی اسمبلی اجلاس:ارکان کی دھواں دھار تقریریں



اسلام آباد (24نیوز)پارلیمنٹ میں سپیکر قومی اسمبلی اسد قیصر کی صدارت میں اجلاس جاری ہے جس میں ارکان دھواں دھار تقریریں کررہے ہیں۔

ہمارے وزیراعظم نے ہمارے ملک کو مذاق بنا دیا : حنا ربانی کھر  

سابق وزیر خارجہ حنا ربانی کھر  نے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ ہمارے وزیراعظم نے ایرانی صدر کے ساتھ کھڑے ہوکر کہا کہ ہماری سرزمین استعمال کی گئی، ہمارے وزیراعظم نے ہمارے ملک کو مذاق بنا دیا ہے ،مودی ایک ایسا وزیراعظم ہے جس نے اپنے ملک میں قتل عام کی روایت ڈالی، وزیراعظم کا کیا کام کہ وہ کہے کہ افغانستان میں فلاں قسم کا نِظام آنا چاہیے،جاپان اور جرمنی کا جغرافیہ بھی تبدیل کردیا۔

ویڈیو دیکھیں:

ایوان میں نو بے بی نو کے نعرے

وفاقی وزیر مراد سعید کو فلور دینے پر اپوزیشن کا شور شرابہ، ایجنڈے پر آئیں۔ اپوزیشن ارکان کی آوازیں،مراد سعید نے کہا کہ آپ میں ہمت ہی نہیں مجھے سن سکیں، مراد سعید کے اظہار خیال کے دوران اپوزیشن نے  نعرے بازی شروع کردی، نوبے بی نو،نو بے بی  نو ،بے بی نہیں چلے گی، بے بی بیٹھ جا ،بے بی بات نہیں کرے گی کے تعرے لگائے گئے۔

ویڈیو دیکھیں:

مراد سعید  نے کہا کہ یہاں نعرے لگانے والوں سے پوچھتا ہوں، کوئی شرم ہوتی ہے، کوئی حیا ہوتی ہے جو آکسفورڈ یونیورسٹی سے ہمارے پیسوں سے پڑھا  وہ اب بات کرے گا،ان کے گھر میں ایک پیسہ بھی ان کی محنت کی کمائی کا نہیں ہے، ہر سڑک، ہر پل، ہر ترقیاتی فنڈ کا پیسہ بلاول نے کھایا ،بلاول سن لو! احتساب کا عمل چلے گا اور پیسہ نکالیں گے، احتساب ہوکر رہے گا ہم ادب سے بات کرتے ہیں، دلیل سے بات کرتے ہیں۔

ہم خارجہ پالیسی سمیت ہر معاملے پر چیلنج کرتے ہیں آپ کے دور میں ڈو مور اور ہمارے دور میں امریکہ ہمیں پیشکش کررہا ہے، ہمارے دور میں انڈیا نے درخت گرائے تو ہم نے ان کے طیارے گرادیئے، اپوزیشن کے شدید احتجاج کے باعث ڈپٹی سپیکر نے اجلاس میں نماز ظہر کا آدھے گھنٹے کا وقفہ کرادیا ،پیپلز پارٹی کے احتجاج کے دوران ن لیگی ارکان بھی اپنی نشستوں پر کھڑے رہے۔

پٹرولیم مصنوعات کی قیمتوں میں اضافہ سے متعلق توجہ دلاو نوٹس

قومی اسمبلی اجلاس میں پٹرولیم مصنوعات کی قیمتوں میں اضافہ سے متعلق توجہ دلاو نوٹس عبد الاکبر چترالی نے پیش کیا ،توجہ دلائو نوٹس دلائو نوٹس میں کہا گیا ہے کہ سابق حکومت نے جب 22ڈالر فی بیرل قیمت تھی ،حکومت نے ٹیکسز کم نہیں کئے،وفاقی وزیر پٹر ولیم عمر ایوب خان  نے کہا کہ سابق حکومت نے 38فیصد تک ٹیکس رکھا ، ہم نے ٹیکس کم کئے ، ہماری حکومت نے 50ارب روپے کا بوجھ عوام پر منتقل نہیں ہونے دیا ، دس سال حکومت کو سو تیل کے کنویں کھودنے تھے جس کا صرف 36فیصد کھودے گئے ۔

انہوں نے کہا کہ سابق حکومت نے دس سال گنوا دیئے گئے ، ہم سابق حکومت کا اعمال نامہ قوم کے سامنے رکھتے جائیں گے ۔

اظہر تھراج

Senior Content Writer