بھارت کی آبی جارحیت، سیلابی ریلوں نے تباہی مچادی

بھارت کی آبی جارحیت، سیلابی ریلوں نے تباہی مچادی


(24 نیوز) بھارت کی آبی جارحیت کے باعث پنجاب اورسندھ میں کئی بستیاں زیرآب آگئیں، متاثرہ علاقوں میں فصلیں تباہ ہوگئیں، انتظامیہ نے فلڈ ریلیف کیمپس قائم کردئی۔

 جنگی جنون میں‌ مبتلا مودی سرکارنےپانی کوہتھیار بنالیا،بھارت کی آبی دہشتگردی سے دریاؤں میں آنے والی طغیانی اورسیلابی ریلوں نےپنجاب اورسندھ کےبیشترعلاقوں میں تباہی مچادی۔ دریائے ستلج میں کنگن پورکے مقام پرپانی کی سطح ایک لاکھ کیوسک تک پہنچ گئی،سیلابی ریلے سے بیشتر دیہات زیرآب گئے،سیکڑوں ایکڑپرتیارفصلیں تباہ ہوگئیں۔

حویلی لکھااورگنڈاسنگھ کےمقام پرسیلابی ریلوں نےنقصان پہنچایا،کئی بستیاں زیرآب آگئیں، ریسکیوحکام کے مطابق اٹاری سمیت مختلف مقامات پرریسکیوکی6ٹیموں نےریلیف آپریشن میں حصہ لیا۔

صوبائی وزیرڈیزاسٹرمینجمنٹ پنجاب میاں خالد محمودنے‏‏‏‏24 نیوزسےگفتگومیں کہا کہ دریائےستلج میں مزید پانی آنے سے قصور،اوکاڑہ،ساہیوال سمیت7اضلاع متاثرہوسکتےہیں،اس حوالےسےپی ڈی ایم اے،پاک فوج، ریسکیواورانتظامی ادارےالرٹ ہیں۔

پنجاب کے ساتھ سندھ کےعلاقوں کے شدید متاثر ہونے کا بھی خدشہ پیدا ہوگیا ہے، کندھ کوٹ میں کچے کے علاقےمیں پانی کاریلا داخل ہوگیا، جام سونہارومیں بند ٹوٹ گیا،جس سے500 سوسےزائدمکانات متاثرہوئے جبکہ کئی علاقوں کازمینی رابطہ منقطع ہوگیا۔

خیرپورناتھن شاہ اورمیہڑمیں کچےکےعلاقوں میں سیلاب کےباعث ہزاروں افراد بے گھرہوگئے،موئنجو دڑو میں سیلابی ریلا گزرنےسےسینکڑوں ایکڑاراضی اوردیہات زیرآب آگئے۔

Malik Sultan Awan

Content Writer