سابق امریکی سفیر کا مودی پر الزام

سابق امریکی سفیر کا مودی پر الزام


واشنگٹن (24 نیوز) پاکستان میں تعینات سابق امریکی سفیر نے بھارتی وزیر اعظم نریندر مودی پر الزام لگادیا۔کہتی  ہیں کہ طالبان مذاكرات میں امریکی مصروفیت کا فائدہ مودی نے کشمیر میں اٹھایا۔

پاکستان میں امریکہ کی سابق سفیر این پیٹرسن نے کہا ہے کہ بھارتی وزیر اعظم نریندر مودی نے جموں اور کشمیر کی آئینی حیثیت ختم کر کے حقیقتاً اس پر قبضہ کر لیا ہے، اگرچہ یہ کافی سخت الفاظ دکھائی دیتے ہیں لیکن حقیقت یہی ہے کہ وہ کشمیر پر قابض ہو گئے ہیں۔

امریکہ کے جان فریڈرکس ریڈیو نیٹ ورک کو انٹرویو دیتے ہوئے این پیٹرسن کا کہنا تھا کہ بھارت اور پاکستان دونوں جوہری ہتھیاروں کے حامل ملک ہیں اور دونوں ملکوں میں 1965 اور 1999 میں کشمیر پر جنگ ہو چکی ہے۔ تاہم دنیا جنوبی ایشیا کے اس مسئلے پر زیادہ توجہ نہیں دے رہی ہے کیونکہ اس کے لیے جنوبی ایشیا اتنا دور ہے کہ انہیں یہ مسئلہ دکھائی نہیں دے رہا ہے۔

انہوں نے کہا ہے کہ برصغیر کی تقسیم کے وقت کشمیر میں مسلمانوں کی واضح اکثریت ہونے کے باوجود اس کا بھارت سے الحاق کر دیا گیا کیونکہ اس کا راجہ ایک ہندو تھا، کشمیر پاکستانی عوام اور لیڈروں کے لیے ایک جذباتی مسئلے کی حیثیت رکھتا ہے اور جب وہ سابق صدر مشرف کے دور میں پاکستان میں امریکی سفیر کی حیثیت سے تعینات تھیں تو اس وقت بھی پاکستانی قیادت کے لیے مسئلہ کشمیر نفسیاتی طور پر انتہائی اہم اور حساس تھا۔

اظہر تھراج

Senior Content Writer