خوبرو ڈانسر باپ کے ہاتھوں قتل

خوبرو ڈانسر باپ کے ہاتھوں قتل


انقرہ(24نیوز) ترکی کی ڈانسر دائدم اوسلو کو باپ نے قتل کر دیا ،لاش فریج میں چھپائے رکھی ، ملزم  نے اعتراف جرم کرلیا۔

تفصیلات کے مطابق  ترکی میں ایک بیلی ڈانسر کو قتل کرکے ان کے جسم کے ٹکڑے کرنے والے شخص کو گرفتار کرلیا گیا،  ملزم نے 32 سالہ بیلی ڈانسر دائدم اوسلو کو ذاتی وجوہات کی بناء پر قتل کرکے ان کے جسم کو چھوٹے ٹکڑوں میں کاٹنے کے بعد ان ٹکڑوں کو کچھ دن کے لیے فریج میں بھی رکھا،مقامی ذرائع کا کہناتھاکہ32 سالہ بیلی ڈانسر دائدم اوسلو کو ان کے والد 55 سالہ حسن اوسلو نے ہی قتل کیا، جس نے اپنی بیٹی کو قتل کرنے کا اعتراف بھی کرلیا۔

حسن اوسلو بنیادی طور پر کباب فروش ہیں ان کی شہر کے مصروف علاقے میں گوشت کی دکان ہے، دکان سے انتہائی خراب حالت میں انسانی اعضاء کے ٹکڑے ملنے کے بعد پولیس کو ان پر شک ہوا، پولیس جاسوس کتوں کی مدد اور تفتیش کے بعد یہ پتہ لگانے میں کامیاب گئی کہ ملنے والے اعضاء ایک خاتون کے تھے۔

پولیس نے ابتدائی طور پر ٹکڑے ٹکڑے کرکے قتل کی گئی بیلی ڈانسر کے والد کو گرفتار کیا، جنہوں نے اپنی بیٹی کو قتل کرنے اور ان کے ٹکڑے جنگل میں دفنانے کا اعتراف کیا۔