حکومت نے ٹیکس کم کر کے عوام کو ریلیف دیدیا

حکومت نے ٹیکس کم کر کے عوام کو ریلیف دیدیا


اسلام آباد(24نیوز) وفاقی حکومت نےچوکر،میدےپرٹیکس ختم جبکہ گھی اورآئل پرٹیکس 7 سےکم کرکے2فیصدکردیا مگراوپن مارکیٹ میں گھی،آئل اورآٹےکی پرانی قیمتیں بحال نہ ہوسکیں۔چینی بھی سرکاری نرخنامےکےبرعکس پندرہ روپےمہنگی فروخت کی جارہی ہے۔

وفاقی حکومت نےگھی اورآئل پرٹیکس 7سےکم کرکےدوفیصدکیاہےمگراوپن مارکیٹ میں گراں فروش مافیاشہریوں کوبخشنےکیلئےتیارنہیں ۔ ٹیکس کم ہونےکےباوجودگھی اورآئل کی پرانی قیمتیں بحال نہیں ہوسکیں۔درجہ دوم کاگھی145کی بجائے170 روپےمیں فروخت ہورہاہےاوردرجہ اول کا گھی ایک ستر کی بجائے 185میں بیچاجارہاہے۔

اسی طرح مختلف کمپنیوں کاکوکنگ آئل سترہ سے پچیس روپےفی لٹرمہنگافروخت ہورہا ہے۔ حکومت نے چوکر اور میدے پر ٹیکس ختم کرنے کے بعد بیس کلو آٹے کاتھیلا760 روپےمیں فراہم کرنےکاوعدہ کیامگرحکومتی دعوےکےبرعکس بیس کلوآٹےکاتھیلابدستور790 سے810 روپےمیں فروخت ہورہاہے ۔ اسی طرح چینی بھی سرکاری قیمت کےبرعکس 15 روپےاضافی قیمت کیساتھ75 روپےفی کلوگرام کےحساب سے بک رہی ہے۔

شہریوں کاکہناہےکہ حکومت نے اشیائے ضروریہ پر ٹیکس کم توکیامگرپرانی قیمتیں بحال نہ ہونےکیوجہ عام آدمی کوکوئی فائدہ نہیں مل سکا ۔ حکومت خواب خرگوش کےمزےلینےوالےافسران کوٹھنڈےکمروں سےفیلڈمیں نکالےتاکہ ریلیف عام شہری تک پہنچ سکے ۔

سٹاف ممبر، یونیورسٹی آف لاہور سے جرنلزم میں گریجوایٹ، صحافی اور لکھاری ہیں۔۔۔۔