پرویز مشرف کیخلاف سنگین غداری کیس دائر کرنے پر مجھے نکالا گیا: نواز شریف


اسلام آباد( 24نیوز )سابق وزیر اعظم نواز شریف نے کہا ہے کہ مجھے پرویز مشرف کیخلاف غداری کا مقدمہ بنانے کی سزا دی گئی۔
سابق وزیر اعظم نواز شریف نے پنجاب ہاؤس میں میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ میں نے عدالت میں تمام سولات کے جوابات دے دیے ہیں، پرویز مشرف نے جج صاحبان کو گھروں میں قید کردیا،مشرف پر مقدمہ بنانے پر دھمکیاں دی گئیں،مجھے دباؤ میں لانے کیلئے طرح طرح کی کوششیں کی گئیں،مشرف کے مقدمے سے پہلے میرے بااعتماد ساتھیوں نے بنی گالہ میں عمران خان سے ملاقات کی جس میں عمران خان نے دھاندلی بارے کوئی بات نہیں کی،جب مشرف پر مقدمہ بنایا تو لندن میں تاجروں سے ملاقات کے بعد عمران خان اور طاہرالقادری دھرنے کا پروگرام لے کر آگئے چار ماہ تک دھرنا دیا گیا،وزیر اعظم کے استعفے کا مطالبہ کیا جاتا رہا،سب جانتے ہیں کہ پیچھے کون تھا۔
انہوں نے کہا کہ انٹیلی جنس سربراہ کا پیغام پہنچایا گیا کہ میں مستعفی ہوجاؤں،عمران خان ایمپائر کی انگلی اٹھنے کی بات کرتے رہے،مجھے ہٹانا مقدمے کا واحد حل سمجھا گیا،مجھے اس لیے نکالنے کی کوشش اس لیے کی گئی کہ میں نے سر جھکا کر نو کری کرنے سے انکار کردیا،مجھے کسی کے حب الوطنی کے سرٹیفکیٹ کی ضرورت نہیں،میں پاکستان کا بیٹا ہوں مجھے کسی کا ڈر نہیں ہے،سرٹیفکیٹ لینے کو اپنی توہین سمجھتا ہوں۔

یہ بھی پڑھیں: عام انتخابات 2018 کےلئے نامزدگی فارمز کی چھپائی مکمل

نواز شریف نے کہا کہ  میری نااہلی اور پارٹی صدارت سے ہٹانے کے اسباب و محرکات کو قوم بھی اچھی طرح جانتی ہے، کیا میرے خلاف فیصلہ دینے والے ججوں کو مانیٹرنگ جج لگایا جا سکتا ہے؟  کیا کسی لفظ کی تشریح کے لیئے گمنام ڈکشنری استعمال کی جاتی ہے؟ کیا کسی سپریم کورٹ کے بینچ نے جے آئی ٹی کی نگرانی کی؟  کیا کسی نے اقامے پر مجھے نااہل کرنے کی درخواست دی تھی؟، یہاں جتنے گواہان پیش ہوئے کسی نے گواہی نہیں دی کہ میں نے کوئی جرم کیا، آپ اورمجھ سمیت سب کو اللہ کی عدالت میں پیش ہوناہے، ریفرنس کا فیصلہ آپ پر چھوڑ رہا ہوں۔

سابق وزیر اعظم صحافیوں کے سوالات کے جوابات دیے بغیر پریس کانفرنس ختم کرکے چلے گئے،جب صحافیوں نے اصرار کیا تو کہا سوالات کے جواب پھر کسی دن دوں گا۔

یہ بھی پڑھیں: دانیال عزیز کو تھپڑ مارنا افسوسناک عمل ، اس کلچر کے ذمہ دار عمران خان ہیں: نواز شریف

اس سے قبل انہوں نے مسلسل تیسرے روز ایون فیلڈ ریفرنس میں اپنا بیان ریکارڈ کرادیا،انہوں نے آخری پانچ سوالوں کے جواب بھی جمع کروادیے ہیں،احتساب عدالت کے جج محمد بشیر نیب کی جانب سے دائر ریفرنس کی سماعت کی ، ریفرنس میں نامزد تینوں ملزمان نواز شریف ، مریم نواز اور کیپٹن (ر) محمد صفدر کمرہ عدالت میں موجود رہے۔

مزید اس ویڈیو میں: